نیب کیخلاف جارحانہ اور منظم مہم چلائی جا رہی ہے ، بد عنوانی ایک ناسور ، جس کا واحد علاج سرجری : جسٹس (ر) جاوید اقبال

نیب کیخلاف جارحانہ اور منظم مہم چلائی جا رہی ہے ، بد عنوانی ایک ناسور ، جس کا ...

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر) چیئرمین قومی احتساب بیورو جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال نے کہا ہے اس وقت نیب کے خلاف ایک جارحانہ اور منظم مہم چلائی جا رہی ہے۔ نیب کے خلاف مہم کا مقصد لوگوں میں مایوسی پیدا کرنا ہے لیکن یقین دلاتا ہوں کوئی ڈر، کوئی خوف، کوئی لالچ اور کوئی دھمکی نیب کے آڑے نہیں آئے گی۔انہوں نے کہا کہ قانون سے کوئی بالاتر نہیں ہے، نیب کا کسی گروپ سے، کسی سیاست سے، کسی سیاستدان سے اور کسی حکومت سے کسی قسم کا کوئی تعلق نہیں ہے۔چیئرمین نیب جسٹس ریٹائرڈجاوید اقبال نے کہا ہے کہ ملک میں بد عنوانی دیمک سے بڑھ کر ناسور کی صورت اختیارکرچکی ہے، بدعنوانی کے ناسورکا واحدعلاج سرجری ہے،دبئی پلازوں میں دیکھنا ہوگا کہ ان کے پاس پیسہ کہاں سے آیا؟بدعنوان عناصر کیخلاف قانون کے مطابق زمین تنگ کردی جائے گی، بیرون ملک رقوم ہرصورت پاکستان واپس لائیں گے، ملک میں اب صرف آئین وقانون کی حکمرانی ہوگی، ان لوگوں پرہاتھ ڈالاجن کیخلاف کوئی کارروائی کاتصوربھی نہیں کرسکتا تھا۔منگل کو بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے چیئرمین نیب جسٹس ریٹائرڈجاوید اقبال نے کہا کہ ملک 94ارب ڈالر کامقروض ہے، یہ رقم ترقیاتی منصوبوں پرخرچ ہوئی نظرنہیں آتا، بدعنوان عناصر کیخلاف قانون کے مطابق زمین تنگ کردی جائے گی،لوٹی گئی دولت منی لانڈرنگ کی گئی ۔بیرون ملک رقوم ہرصورت پاکستان واپس لائیں گے،منی لانڈرنگ کی روک تھام کیلئے اقدامات کیے جارہے ہیں، چہرہ نہیں بلکہ قانون کے مطابق انکوائریاں اور تحقیقات جاری ہیں۔

چیئرمین نیب

مزید : صفحہ اول