تھر پارکرمیں خوراک کی قلت پر قابو پانے کیلئے معاہدہ طے پا گیا

تھر پارکرمیں خوراک کی قلت پر قابو پانے کیلئے معاہدہ طے پا گیا

اسلام آباد(صباح نیوز)بینظیر انکم سپورٹ پروگرام اور ورلڈ فوڈ پروگرام کے مابین صوبہ سندھ کے ضلع تھر پارکر کے خشک سالی سے متاثرہ علا قوں میں خوراک کی قلت پر قابو پانے کیلئے مفاہمتی یاداشت پر دستخط کئے گئے۔ سیکرٹری بی آئی ایس پی عمر حمید خان اور کنٹری ڈائریکٹر ڈبلیو ایف پی فنبرقرن نے یاداشت پر دستخط کئے۔ منصوبے "شاک رسپانسو سوشل پروٹیکشن"کو خاص طورپر جنوبی سندھ کی خشک سالی سے متاثرہ آبادی کی مشکلات کو ختم کرنے کیلئے ڈیزائن کیا گیا ہے۔ معاہدے کے مطابق ضلع تھرپارکر میں 63,000بی آئی ایس پی مستحقین کو اس ا قدام کے تحت 1000/-روپے وظیفہ دیا جائیگا جو بی آئی ایس پی ماہانہ غیر مشروط مالی معاونت 1650/-روپے کے علاوہ ہوگا۔سیکرٹری بی آئی ایس پی نے اس شراکت داری کو پاکستان میں تیزی سے بڑھنے والے سٹنٹگ گروتھ اور غذائی قلت جیسے مسائل کو حل کرنے کیلئے بے حد اہم قرار دیا۔ کنٹری ڈائریکٹر ڈبلیو ایف پی نے کہا بی آئی ایس پی ڈبلیو ایف پی کا ایک اہم شراکت دار ہے اور ملک کے بنیادی سطح کے مسا ئل کو حل کرنے کے حوالے سے ڈبلیو ایف پی ، بی آئی ایس پی کیساتھ کام کرنے پر بہت خوش ہے، اس اقدام کی مجموعی لاگت 0.574 ملین امریکی ڈالر یا 769ملین پاکستانی روپے ہے۔ مفاہمتی یاداشت کے مطابق مستحقین میں رقوم کی تقسیم بی آئی ایس پی کرے گیا جبکہ منصوبے کی کمیونیکیشن ، مانیٹرنگ اور اویلوایشن کے فرائض ڈبلیو ایف پی سرانجام دے گا۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر