کرتار پور راہداری سے 4 ہزار سکھ زائرین روزانہ آ سکیں گے لیکن کوئی پاکستانی بھارت نہیں جا سکے گا : میجر جنر ل آصف غفور

کرتار پور راہداری سے 4 ہزار سکھ زائرین روزانہ آ سکیں گے لیکن کوئی پاکستانی ...
کرتار پور راہداری سے 4 ہزار سکھ زائرین روزانہ آ سکیں گے لیکن کوئی پاکستانی بھارت نہیں جا سکے گا : میجر جنر ل آصف غفور

  

راولپنڈی (ڈیلی پاکستان آن لائن )ڈی جی آئی ایس پی آرمیجر جنرل آصف غفور  نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہاہے کہ ملک کی مجموعی سیکیورٹی صورتحال پر بات چیت کرنے کیلئے آیاہوں ، پچھلے دو سالوں میں سیز فائر کی خلاف ورزی میں کافی اضافہ ہواہے ، ڈی جی ایم او میں عارضی ریلیف مل جاتا ہے ۔

تفصیلات کے مطابق ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور کا کہناتھا کہ بھارت کی جانب سے 2017 میں ایک ہزار 81 اور موجود ہ سال میں 20 ہزار 593 مرتبہ سیز فائر کی خلاف ورزی کی گئی ہے ،جس میں 55 سولین شہید اور300 زخمی ہوئے جوکہ تاریخ میں سب سے زیاد ہ ہیں ۔

ان کا کہناتھا کہ اگر فائرنگ مورچوں پر ہو تو ملٹری کی شہادتیں ہونی چاہیے لیکن وہ شہری آبادی کو ٹارگٹ کرتے ہیں،اس پر ہمارے تحفظات ہیں اور بھارت اس بات کو سمجھے ، حکومت پاکستان نے بہت سارے امن کے اقدامات اٹھائے ہیں کہ بھارت کے ساتھ تعلقات بہتری کی طر ف جا سکیں لیکن بھارت مذاکرات کی طرف نہیں آتا اور مسلسل انکار کرتاہے ۔ان کا کہناتھا کہ ہم نے پچھلے دنوں کرتار پور بارڈر کھول دیا ہے ، اس کو بھی بھارتی میڈیا نے منفی انداز میں پیش کرنا شروع کر دیا ہے ، سکھ برادری کی مذہبی جگہ بارڈر کے بالکل قریب ہے ،سڑک کے ساتھ ساتھ پارکنگ ہے آگے جا کر راوی پر پل بنے گا ،راستے کے اردگر د فینسگ لگائی جائے گی ، جو بھی سکھ آئیں گے صرف اس کے اندر رہیں  لیکن کوئی پاکستان وہاں نہیں جا سکتا، روزانہ کی بنیاد پر سکھ برادری کے 4 ہزار زائرین آسکیں گے ۔

مزید : قومی