سعودی دارالحکومت میں خلیج تعاون کونسل کا سربراہی اجلاس تنظیم کے فعال ہونے کی واضح نشانی ہے:ڈاکٹر انور قرقاش

سعودی دارالحکومت میں خلیج تعاون کونسل کا سربراہی اجلاس تنظیم کے فعال ہونے کی ...
سعودی دارالحکومت میں خلیج تعاون کونسل کا سربراہی اجلاس تنظیم کے فعال ہونے کی واضح نشانی ہے:ڈاکٹر انور قرقاش

  

دبئی(ڈیلی پاکستان آن لائن)متحدہ عرب امارات کے وزیر مملکت برائے امور خارجہ ڈاکٹر انور قرقاش نے کہا ہے کہ کا قطر بحران کے باوجود سعودی دارالحکومت میں خلیج تعاون کونسل کا سربراہی اجلاس تنظیم کے فعال ہونے کی واضح نشانی ہے۔

عرب میڈیا کے مطابق متحدہ عرب امارات کے وزیر مملکت برائے امور خارجہ ڈاکٹر انور قرقاش کا کہنا تھا کہ اقتصادی میدان میں کامیابی اور تنظیم کے رکن ممالک کے درمیانمشترکہ منڈی کا خواب اسی صورت مکمل ہو سکتا ہے جب قطر انتہا پسندی کی حمایت ترک اور خطے کے استحکام کو گزند پہنچانے والے امور میں مداخلت بند کر دے۔انہوں نے کہا کہ موجودہ سیاسی حقیقت پسندی کے باعث خلیج تعاون کونسل کو اپنا کام جاری رکھنے میں مدد ملی، بحران کے دوران بھی کونسل کی مختلف کمیٹیوں کے اجلاس باقاعدگی سے جاری رہے  تاہم قطر کی جانب سے اجتماعی مفاد کے برخلاف فیصلوں سے سٹرٹیجک اور سیاسی محاذ کسی حد تک ضرور متاثر ہوا، اس صورتحال میں ریاض، ابوظہبی اور منامہ کا ذمہ دارانہ کردار تاریخ کا حصہ ہے۔واضح رہے کہ خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز کی دعوت پر خلیج تعاون کونسل کا  سعودی دارالحکومت ریاض میں رواں ماہ 9 دسمبر  کو  ہونے والے اجلاس میں متعدد امور زیر بحث آئیں گے جن میں رکن ملکوں کے درمیان سٹرٹیجک فوجی تعاون سرفہرست ہو گا۔سعودی فرمانروا نے قطر کے امیر شیخ تمیم بن حماد الثانی کو بھی خلیجی ملکوں کی سربراہی کانفرنس میں مدعو کیا ہے۔

مزید : عرب دنیا