Huawei کمپنی کی اعلیٰ آفیسر کو امریکہ کے کہنے پر کینیڈا میں گرفتار کرلیا گیا، چین اور امریکہ کے درمیان بڑا تنازعہ کھڑا ہوگیا

Huawei کمپنی کی اعلیٰ آفیسر کو امریکہ کے کہنے پر کینیڈا میں گرفتار کرلیا گیا، ...
Huawei کمپنی کی اعلیٰ آفیسر کو امریکہ کے کہنے پر کینیڈا میں گرفتار کرلیا گیا، چین اور امریکہ کے درمیان بڑا تنازعہ کھڑا ہوگیا

  

اوٹاوا(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکہ اور چین میں تجارتی جنگ جاری ہے۔ امریکہ کی طرف سے سینکڑوں چینی مصنوعات کے ٹیرف بڑھائے جا چکے ہیں اور چین کی طرف سے بھی جوابی وار ہو رہے ہیں۔ اب امریکہ نے ایک اور ایسا خوفناک قدم اٹھا لیا ہے کہ دونوں کے درمیان کشیدگی عروج کو چھونے لگی ہے۔ میل آن لائن کے مطابق ایران پر عائد امریکی پابندیوں کی خلاف ورزی کرنے کے الزام میں چینی موبائل فون ساز کمپنی ’ہواوے‘ (Huawei)کی گلوبل چیف فنانشل آفیسرمینگ وین ژاﺅ کو کینیڈا میں گرفتار کر لیا گیا ہے اور اسے امریکہ منتقل کیا جا رہا ہے۔ چین کی طرف سے اس اقدام پر کینیڈا اور امریکہ دونوں پر کڑی تنقید کی گئی ہے اور مینگ وین ژاﺅ کی فوری رہائی کا مطالبہ کیا گیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق مینگ وین ژاﺅ ’ہواوے‘ کمپنی کے بانی رین ژین فئی کی بیٹی ہیں۔ کینیڈین پولیس نے امریکہ کی درخواست پرانہیں وینکوور میں حراست میں لیا۔کینیڈین محکمہ انصاف کے ترجمان کے مطابق مینگ کو یکم دسمبر کو حراست میں لیا گیا اور جمعہ کے روز عدالت میں پیش کیا جائے گا۔ کینیڈا میں واقع چینی سفارتخانے کی طرف سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ ”مینگ وین ژاﺅ نے کسی کینیڈین یا امریکی قانون کی خلاف ورزی نہیں کی۔ چین امریکہ اور کینیڈا پر واضح کر چکا ہے کہ وہ اپنے غلط روئیے کی تصحیح کریں اور مینگ وین ژاﺅ کو فوری طور پر رہا کریں۔“واضح رہے کہ عالمی خبررساں ایجنسی رائٹرز کے مطابق امریکہ کی طرف سے ہواوے کمپنی پر امریکی خطے کی مصنوعات ایران بھیجنے کا الزام عائد کیا گیا ہے۔ 2016ءسے امریکی حکام اس معاملے کی تحقیقات کر رہے تھے۔

مزید :

بین الاقوامی -