دفاعی ترجمان میڈیا کے حوالے سے چار سال قبل بات کرلیتے تو ملک کوناقابل تلافی نقصان نہ پہنچتا :میاں جاوید لطیف

دفاعی ترجمان میڈیا کے حوالے سے چار سال قبل بات کرلیتے تو ملک کوناقابل تلافی ...
دفاعی ترجمان میڈیا کے حوالے سے چار سال قبل بات کرلیتے تو ملک کوناقابل تلافی نقصان نہ پہنچتا :میاں جاوید لطیف

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) مسلم لیگ ن کے رکن قومی اسمبلی میاں جاوید لطیف نے کہاہے کہ دفاعی ادارے کے ترجمان میڈیا کے بارے میں جو آج کہہ رہے ہیں ، یہ با ت چار سال پہلے کرلیتے تو ملک کوناقابل تلافی نقصان نہ ہوتا ۔

جیونیوز کے پروگرام ”کیپٹل ٹاک“ میں گفتگو کرتے ہوئے میاں جاوید لطیف نے کہاہے کہ پانامہ کیس ایک سیاسی کیس تھا اور اگر یہ ایک سیاسی کیس نہ ہوتا تو وزیر اعظم عمران خان چیف جسٹس کی موجودگی میں کھڑے ہوکر اس کا ذکر نہ کرتے ۔ انہوںنے کہا کہ وزیر اعظم کے کہنے میں تمام ادار ے ہونے چاہئے لیکن کسی وزیر اعظم کو یہ حق نہیں کہ وہ کسی ادارے کے بارے میں کہے کہ وہ میرے ساتھ کھڑا ہے اور ایک ادارے کے بارے میں کہے کہ مجھے اس پر افسوس ہوا ہے ۔

ان کا کہنا تھا کہ جب یہ بات نوازشریف کے بارے میں کی جاتی تھی اس وقت عمران خان لڈیا ں ڈال رہے تھے ،ان کا کہنا تھا کہ آج دفاعی ادارے کے ترجمان کی جانب سے کہا جارہاہے کہ میڈیا مثبت چہرہ دکھائے تو ملک کے حالات اچھے ہوسکتے ہیں لیکن اگر یہ بات چار سال پہلے کرلی جاتی تو وہ قابل تلافی نقصان نہ ہوتا جو ملک کوہواہے ۔

مزید : قومی