پنجاب بھر میں چوکیداری نظام فوری نافذ کرنے کا فیصلہ کرلیا گیا

پنجاب بھر میں چوکیداری نظام فوری نافذ کرنے کا فیصلہ کرلیا گیا
پنجاب بھر میں چوکیداری نظام فوری نافذ کرنے کا فیصلہ کرلیا گیا

  



لاہور(لیاقت کھرل)صوبے بھر میں امن امان اور کرائم کے بڑھتے تناسب کے پیش نظر امن کمیٹیاں اورچوکیداری نظام کو بحال کیا جا رہا ہے۔پولیس افسران کو پروٹوکول ختم کرنے اور فیلڈمیں نکلنے کا حکم دے دیا گیا ہے۔ شہری علاقوں میں ارکان اسمبلی اور عوامی نمائندوں کے ہمراہ کھلی کچہریاں لگانے جبکہ دیہاتی علاقوں میں چوکی داری نظام کو نافظ کرنے کا فیصلہ کر لیا گیا ہے۔محکمہ پولیس کے ذرائع نے بتایا ہے کہ نئے آئی جی پنجاب پولیس کے احکامات کی روشنی میں پہلے مرحلے میں لاہور سمیت پنجاب بھر میں پولیس کی خصوصی ٹیمیں تشکیل دی جا رہی ہیں،اس میں منتخب نمائندوں ارکان اسمبلی اور سابق چیئرمینوں کی خدمات بھی حاصل کی جارہی ہیں۔محکمہ پولیس کے بنیادی ڈھانچہ میں تبدیلی لائی جا رہی ہے اور اس میں پولیس افسران کا پروٹوکول ختم کر دیا گیا ہے اور پولیس افسران کو دفاتر میں بیٹھنے کی بجائے فیلڈ میں نکل کر اپنی ذمہ داریاں اداکرنے کا حکم دیا گیا ہے۔

احکامات پر عملدرآمد کی آئی جی پنجاب اور وزیر اعلیٰ پنجاب کو روزانہ کی بنیاد پر رپورٹ پیش کی جائے گی۔ اس حوالے سے پنجاب پولیس کے ایڈیشنل آئی جی انعام غنی نے روزنامہ پاکستان کو بتایا کہ وزیر اعظم پاکستان اور وزیر اعلیٰ پنجاب کے حکم پر نئے آئی جی پولیس شعیب دستگیر نے صوبے بھر میں امن و امان اور سکیورٹی کے معاملات کو بہتر بنانے اور جرائم کی شرح کم کرنے کے لیئے بڑے پیمانے پر کریک ڈائون کرنے کا حکم دے دیا ہے جس میں عملی اقدامات کیئے جا رہے ہیں اور بڑے بڑے جرائم پیشہ افراد پر ہاتھ ڈالنے کے لیئے پولیس کی خصوصی ٹیمیں تشکیل دی جا رہی ہیں اور اس میں اگلے چند روز تک لاہور سمیت پنجاب بھر میں جرائم کے صورتحال میں کمی اور امن و امان کی صورتحال کو بہتر بنا دیا جائے گا۔

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور


loading...