افغان عوام کو المیہ سے بچانے کی کوشش؟

افغان عوام کو المیہ سے بچانے کی کوشش؟

  

پاکستان  سرکار کی طرف سے افغانستانی عوام کو انسانی المیہ سے بچانے کے لئے امداد دی گئی تو اب نجی شعبہ نے بھی تعاون کا آغاز کر دیا ہے۔کراچی سے ڈھائی کروڑ روپے مالیت کی ادویات کابل کے لئے بھیج دی گئیں، اور جلد ہی مزید دس کروڑ روپے کی ادویات بھیجی جائیں گی، پاکستان فارماسیوٹیکل مینو فیکچرنگ ایسوسی ایشن کے چیئرمین عاطف اقبال نے بتایا کہ تمام ادویات مختلف امراض کے علاوہ موسمی اور وبائی امراض کی روک تھام اور علاج  کے لیے بھی ہیں۔حکومت ِ پاکستان کا تسلسل سے یہ موقف رہا ہے کہ افغانستان کو اکیلا چھوڑنے سے نہ صرف خطے،بلکہ دنیا بھر کے امن کو خدشات لاحق ہوں گے،اس لئے دنیا کو افغان عوام کی مدد کرنا چاہیے۔وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے میڈیا کو بتایا کہ19 دسمبر کو اسلام آباد میں اسلامی کانفرنس کا ایک خصوصی اجلاس بھی منعقد ہو گا، اس میں پاکستان نے بی5- ممالک کے علاوہ یورپی یونین کے نائب صدر، اور اقوام متحدہ کی مختلف کمیٹیوں کے نمائندوں کو بھی مدعو کیا ہے۔اسلامی کانفرنس کا یہ خصوصی اجلاس پاکستان میں 41 سال کے بعد ہو رہا ہے۔بلاشبہ امریکی انخلاء کے بعد سے پاکستان افغانستان کے حوالے سے ایک اصولی موقف پر قائم دنیا سے اپیل کئے جا رہا ہے،یہ اجلاس خصوصی اہمیت کا حامل ہو گا،اس میں افغانستان کو انسانی المیے سے بچانے کے لئے تجاویز زیر غور آئیں گی۔پاکستان کی ان کاوشوں کی داد نہ دینا بخیلی ہو گی کہ امریکی انخلاء کے بعد سے موجودہ طالبان حکومت مسلسل ہنگامی صورتِ حال سے دوچار ہے،اور وہاں کے عوام کو بھی امداد کی ضرورت ہے۔

مزید :

رائے -اداریہ -