پاکستان میں ہربل ادویات کی ٹیسٹنگ کا کوئی نظام موجود نہیں،نور مہر

پاکستان میں ہربل ادویات کی ٹیسٹنگ کا کوئی نظام موجود نہیں،نور مہر

  

لاہور(نمائندہ خصوصی)صدر پاکستان ڈرگ لائر فورم نور مہر نے کہا ہے کہ پاکستان میں ہربل ادویات کی ٹیسٹنگ کا نظام حکومتی لیب میں سرے سے موجود ہی نہیں ہے۔ پاکستان میں حکومت کو چاہیے کہ سب سے پہلے اپنی ڈائریکٹ لبارٹریز میں ٹیسٹنگ کا مکمل نظام بحال کیا جائے۔ انہوں نے بتایا کہ چند روز پہلے قومی ادارہ صحت اسلام آباد نے نوٹیفکیشن F.No.3 -4/1-FFL /2021-DC&TMD کے  مطابق واضح حکم دیا ہے، ہربل ٹیسٹنگ کو  یقینی بنایا جائے۔ اس نوٹیفکیشن  سے  ظاہر ہوا کہ  اس سے پہلے تمام لیب کام نہیں کر رہی تھی، اور نہ ہی لیب میں صلاحیت موجود ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ ملک بھر سمیت پنجاب میں ضروری ہے کہ ہربل ادویات کے نظام کو بہتر سے بہتر بنایا جانا چاہیے۔

 ملک کی عوام غیر محفوظ ہے۔ڈریپ ایکٹ 2012 کے مطابق ہربل ہومیو ادویات ڈرگ کا درجہ نہیں رکھتی اور یہ دوا علاج کیلئے تیار نہیں ہوتی، یہ ہربل ہومیو نیو ٹرا ادویات ڈاکٹر اپنے نسخہ میں نہیں لکھ سکتے، اور نہ ہی یہ ادویات کی رجسٹریشن ہوتی ہے۔ایسی ادویات کی  صرف ا نلسٹمنٹ ایس آر او 412 کے مطابق ہوتی ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -