ترقی و خوشحالی کی چابی تعلیم یافتہ، باکردار نوجوانوں کے ہاتھ میں ہے: طاہر القادری

      ترقی و خوشحالی کی چابی تعلیم یافتہ، باکردار نوجوانوں کے ہاتھ میں ہے: ...

  

         لاہور (نمائندہ خصوصی) منہاج یونیورسٹی لاہور میں منعقدہ کانووکیشن میں 35 سو سے زائد فارغ التحصیل طلبا و طالبات کو ڈگریوں سے نوازا گیا، کانووکیشن کی تقریب میں وزیراعظم کے مشیر شہباز گل، سابق وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف، پنجاب حکومت کے ترجمان حسان خاور، ناظم اعلیٰ منہاج القرآن انٹرنیشنل خرم نواز گنڈا پور اور میاں عمران مسعود نے خصوصی شرکت کی۔ کانووکیشن سے منہاج یونیورسٹی لاہور کے بورڈ آف گورنرز کے چیئرمین تحریک منہاج القرآن کے بانی و سرپرست شیخ الاسلام پروفیسرڈاکٹر محمد طاہر القادری، ڈپٹی چیئرمین ڈاکٹر حسین محی الدین قادری، وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر ساجد محمود شہزاد نے اظہار خیال کیا اور ڈگری پروگرامز مکمل کرنے والے طلبا و طالبات کو مبارکباد دی،ڈاکٹر حسین محی الدین قادری نے مہمانوں کو منہاج یونیورسٹی آمد پر مبارکباد دی۔ کانووکیشن سے خطاب کرتے ہوئے شیخ الاسلام پروفیسر ڈاکٹر محمد طاہر القادری نے کہا کہ ترقی اور خوشحالی کی چابی تعلیم یافتہ باکردار نوجوانوں کے ہاتھ میں ہے، تربیت کے بغیر تعلیم بے فائدہ ہے۔نوجوان علم و تحقیق کے ساتھ دائمی رشتہ استوار کریں اور کردار کو شفاف رکھیں،انھوں نے تعلیم مکمل کرنے والے طلبا و طالبات کو مبارکباد باد دی۔کانووکیشن میں وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر ساجد محمود شہزاد نے ڈپٹی چیئرمین ڈاکٹر حسین محی الدین قادری کی اجازت سے کانووکیشن کی تقریب کے آغاز کا اعلان کیا اور خطبہ استقبالیہ پیش کیا۔انھوں نے اپنے خطبہ استقبالیہ میں منہاج یونیورسٹی لاہور کا تعارف اور مختلف ڈگری پروگرامز کے بارے میں شرکاء کانووکیشن کو آگاہ کیا اور بتایا کہ منہاج یونیورسٹی لاہور اپنے بہترین ڈگری پروگرامز اور معیار تعلیم کی وجہ سے ڈبلیو 3 کیٹگری میں شمار ہوتی ہے۔ ڈپٹی چیئرمین بورڈ آف گورنرز منہاج یونیورسٹی ڈاکٹر حسین محی الدین قادری نے تقریب میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ تعلیم، تحقیق اور تربیت منہاج یونیورسٹی لاہور کا طرہ امتیاز ہے۔ اپنے بہترین نظم و نسق اور بلند تحقیقی معیار کی بدولت منہاج یونیورسٹی کا شمار ملکی اور بین الاقوامی سطح  کے بہترین تعلیمی اداروں میں ہوتا ہے۔ چیئرمین سپریم کونسل ڈاکٹر حسن محی الدین قادری،ڈپٹی چیئرمین بورڈ آف گورنرز منہاج یونیورسٹی ڈاکٹر حسین محی الدین قادری اور وائس چانسلر  پروفیسر ڈاکٹر ساجد محمود شہزاد نیمختلف تعلیمی شعبہ جات میں نمایاں کارکردگی دکھانے والے طلبہ کو گولڈ میڈل پہنائے اور میرٹ سرٹیفکیٹس سے نوازا۔کانووکیشن میں وزیراعظم کے مشیر شہباز گل نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سیالکوٹ اور سانحہ ماڈل ٹاؤن جیسے سانحات پر میں شرمندہ ہوں۔ انصاف نہ ملنے سے انتشار پھیلتا ہے۔ سانحہ سیالکوٹ میں انصاف ہوگا اور مجرم پھانسیاں بھی چڑھیں گے۔انہوں نے کہا کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن کیس میں انصاف اس لئے نہیں ہو رہا کیونکہ اس میں گریڈ 21   اور 22کے افسران اوراشرافیہ شامل ہیں۔اپنے خطاب میں انہوں نے کہا کہ منہاج یونیورسٹی لاہور اور شیخ الاسلام پروفیسر ڈاکٹر محمد طاہر القادری کو علم کے فروغ پر مبارکباد دیتا ہوں۔ سابق وزیراعظم راجہ پرویز اشرف نے کہا کہ شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہر القادری نے پوری دنیا کے سامنے اسلام کا پرامن چہرہ پیش کیا، انہوں  نے کہا کہ معاشرے میں عدم برداشت کا بڑھنا لمحہ فکریہ ہے ہمیں ایک دوسرے کو برداشت کرنے کا کلچر اختیار کرنا ہے یہی ہماری اقدار اور آگے بڑھنے کا راستہ ہے۔پنجاب حکومت کے ترجمان حسان خاور نے کہا کہ ہمیں سانحہ سیالکوٹ جیسے واقعات پر ضرور غور کرنا چاہیے کہ ہم کہاں غلطی کر رہے ہیں؟ انھوں نے کہا کہ جسٹس سسٹم اور رٹ آف گورنمنٹ کو یقینی بنانا ہوگا۔ کانووکیشن  کے اختتام پر سال 2014 ئسے 2020 ء کے بی ایس،ایم اے،ایم فل اور پی ایچ ڈی کے 35 سو کے لگ بھگ فارغ التحصیل طلبا ء  و طالبات کو ڈگریاں تقسیم کی گئیں اورمختلف تعلیمی شعبہ جات میں نمایاں کارکردگی دکھانے والے 179طلباء وطالبات کو گولڈ میڈل جبکہ 278 طلبہ کو رول آف آنر اور میرٹ سرٹیفکیٹس سے نوازاگیا۔ تقریب میں رجسٹرار منہاج یونیورسٹی ڈاکٹر خرم شہزاد، مرکزی سیکرٹری اطلاعات منہاج القرآن انٹرنیشنل نوراللہ صدیقی، شہزاد رسول،حاجی محمد اسحاق،حفیظ چوہدری  چیئر پرسن ویمن امپاورمنٹ تنزیلہ عمران، جہاں آرا وٹو، اظہر زیدی سمیت منہاج یونیورسٹی لاہور کے مختلف تعلیمی شعبہ جات کے ڈینز،فیکلٹی ممبران اور ڈگریاں وصول کرنے والے طلبہ کے والدین نے شرکت کی۔

طاہر القادری

مزید :

صفحہ آخر -