سلیکٹڈ حکمران غریب عوام کا خون چو س رہے: میاں افتخار حسین

سلیکٹڈ حکمران غریب عوام کا خون چو س رہے: میاں افتخار حسین

  

      پبی (نما ئندہ  پاکستان) عوامی نیشنل پارٹی کے سیکرٹری جنرل میاں افتخار حسین نے کہا ہے کہ سلیکٹرز کی بدولت سلیکٹڈ حکمران غریب عوام کا خون چوس رہے ہیں۔ نااہل وزیر اعظم نے تین سال میں محض جھوٹ بولنے کے ریکارڈ قائم کئے ہیں۔ ناقص پالیسیوں کی بدولت مہنگائی اور بے روزگاری نے معیشت کو کھوکھلا کردیا ہے۔ کارخانے بند، معاشی سرگرمیاں معطل اور سرمائے کی گردش رک گئی ہے پبی ون میں انتخابی مہم بارے جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے انتخابی جلسے سے تحصیل پبی کے نامزد امیدوار غیور خٹک، حاجی زرعلی خان، عباس خان غازی، سہیل خان، وسیم خان اور دیگر نے بھی خطاب کیا۔ میاں افتخار حسین نے کہا کہ ملک میں پچھلے پانچ ماہ میں تجارتی خسارہ 20 ارب 59 کروڑ سے تجاوز کرگیا ہے۔ آئی ایم ایف کو کھلانے کیلئے عوام پر ٹیکسوں کا بوجھ بڑھایا جارہا ہے۔ ڈالر کی قیمت 180 روپے تک پہنچ گئی ہے۔ سٹاک مارکیٹ کا کریش کرجانا حکومتی نااہلی اور نالائقی کا واحد ثبوت ہے۔ غیر ملکی قرضوں کے بوجھ اور روپیکی قدر میں مسلسل کمی نے ملک کو بحرانوں میں دھکیل دیا ہے۔ منی بجٹ ملک میں جاری مہنگائی کے طوفان میں مزید تیزی لائے گا۔ سیاست میں پی ٹی آئی کے آنے سے شائستگی ختم ہوگئی ہے۔ نوشہرہ میں اے این پی امیدواران کے انتخابی مہم میں رکاوٹیں کھڑی کی جارہی ہیں، جوکہ ناقابل قبول ہیں۔ صوبے میں نو سالہ اور مرکز میں تین سالہ کارکردگی نے حکمرانوں کی نالائقی عوام پر عیاں کردی ہیاور بلدیاتی انتخابات سے سے بھاگنے کیلئے طرح طرح کے ہتکھنڈے استعمال کئے گئے۔ اپنے ہی انتخابی نشان سے بھاگنے والوں کو عوام فرار نہیں ہونے دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ پختونخوا قدرتی وسائل سے مالا مال ہے لیکن عوام محرومیوں کی زندگی گزارنے پر مجبور ہیں۔ صوبا ئی خودمختاری اور اٹھارہویں آئینی ترمیم کی موجودگی میں بھی صوبے کو آئینی حق نہیں دیا جارہا ہے۔ پاکستان میں سب سے سستی پن بجلی خیبر پختونخوا میں پیدا ہوتی ہے لیکن عوام پر مہنگی کرکے بیچی جارہی ہے۔ بجلی اور گیس کی مد میں مرکز خیبر پختونخوا کے اربوں روپے کا مقروض ہے۔ صوبے اور مرکز میں ایک ہی پارٹی کے باوجود صوبے کے عوام کو حقوق سے محروم رکھا جارہا ہے۔ اے این پی نے اپنے دورحکومت میں ناصرف صوبے کے حقوق کا حصول ممکن بنایا بلکہ مشکل حالات کے باوجود صوبہ میں ریکارڈ ترقیاتی کام بھی کئے۔ میاں افتخار حسین نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ باچا خان نے پختونوں کیلئے ووٹ کا حق انگریز سے جیتا تھا۔ پختونوں کے پاس ووٹ باچا خان کی امانت ہے۔ حالات کا تقاضہ ہے کہ ملک کو مزید تباہی سے بچانے کیلئے نااہل حکمرانوں سے نجات حاصل کرے۔ 19 دسمبر کو مہنگائی کی ماری عوام ووٹ کے ذریعے نااہل حکمرانوں سے اپنا بدلہ لیں گے

مزید :

پشاورصفحہ آخر -