فلاپ حکومتی پالیسیوں سے معیشت تباہ، افتخار احمدخان

  فلاپ حکومتی پالیسیوں سے معیشت تباہ، افتخار احمدخان

  

شاہجمال (نمائندہ پاکستان)عمران خان  نے قوم سے وعدہ کیا تھا کہ وہ کرپشن کا خاتمہ کریں گے مگر ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل کی رپورٹ کے مطابق پاکستان میں اس وقت کرپشن سابقہ حکومتوں سے کئی گنا زیادہ ہو چکی ہے۔ ان خیالات کا اظہار سیکرٹری اطلاعات پیپلز پارٹی جنوبی پنجاب ایم این اے نوابزادہ افتخار احمد خان نے شاہجمال میں میڈیا نمائندگان سے گفتگو میں کیا انہوں نے کہا کہ مافیا بے لگام ہو چکا ہے۔ ملک میں اس وقت کرپشن میں انتہائی ڈھٹائی اور بیہودہ طریقے سے اضافہ ہو رہا ہے۔کرپشن کی انتہا ہو گئی جب کرونا کی مد میں آنے والی خیراتی رقم میں چالس(بقیہ نمبر39صفحہ7پر)

 ارب روپے کی ڈکیتی ماری گئی اور ایڈیٹر جنرل آف پاکستان کو آئی ایم ایف کے دبا میں آ کر حکومت کی چھپائی ہوئی اس رپورٹ کو منظر عام پر لانا پڑاکرپشن کی ایک اور انتہا یہ ہوئی کہ پہلے ملک میں نوکری یا ترقیاتی کام بکتے تھے اب تو وزارتیں اور صوبے بک رہے ہیں کوئی پوچھنے والا نہیں۔کے پی کے جہاں آٹھ سال سے زیادہ عرصے سے پی ٹی آئی کی حکومت ہے وزیر دفاع پرویز خٹک  کے بھائی موجودہ ایم پی اے نے اپنے ایک نجی ٹی وی انٹرویو میں گواہی دی ہے کہ صوبے میں کرپشن نے ماضی  کی حکومتوں کے تمام ریکارڈ توڑ دیئے ہیں ۔عمران خان نے آئی ایم ایف کے پاس جانے کی بجائے خود کشی کو ترجیح دینے کا وعدہ کیا مگر اب بقول گورنر پنجاب چوہدری سرور کہ خان  نے آئی ایم ایف سے قرض کے لئے ملک کے تمام اثاثے گروی رکھ دیئے ہیں۔ سعودی عرب سے جن سخت شرائط پر قرض لیا جا رہا ہے پارلیمنٹ اور عوام اس  سے بے خبر ہیں۔ اسٹیٹ بنک کا گورنر آئی ایم ایف سے لایا گیا جو پہلے مصر کی معیشت کا بیڑا غرق کرنے میں شہرت رکھتے ہیں۔ملک کی تمام وزارتیں عمران خان  کی اے ٹی ایم مشینیں چلا رہی ہیں۔ مہنگائی ملک کی  بلند ترین سطح پر اور بے روزگاری حد سے بڑھ چکی ہے۔ اور حکومت آئی ایم ایف کے کہنے پر سات ہزار ارب کے نئے ٹیکس لگانے کے لئے منی بجٹ لانے کی تیاری کر رہی ہے۔اب وقت آ گیا ہے کہ قوم اس ظالم، جابر، نالائق اور نااہل حکومت سے چھٹکارا حاصل کرنے کے لیے اور ملک کو اس دلدل سے نکالنے کیلئے پاکستان پیپلز پارٹی  بلاول بھٹو زرداری  کا ساتھ دیں۔

افتخار احمد

مزید :

ملتان صفحہ آخر -