حکومتی اقدامات سے سیاسی عمل  معیشت،ریاستی نظام بری طرح متاثر ہوا،سابق سینٹر پروفیسر ابراہیم خان

   حکومتی اقدامات سے سیاسی عمل  معیشت،ریاستی نظام بری طرح متاثر ہوا،سابق ...

  

 بہاولپور(بیورورپورٹ،ڈسٹرکٹ رپورٹر)  جماعت اسلامی پاکستان کے مرکزی نائب امیر و سابق سینٹر پروفیسر ابراہیم خان نے کہا ہے کہ عمران خان نے اپنی نااہلی، غرور و تکبر، پُرمذہب اعلانات سے اپنی ساکھ اور حکومت کو(بقیہ نمبر16صفحہ6پر)

 خود ڈبو دیا ہے۔ چالیس ماہ میں ملک، عوام اور ریاستی اداروں کو ناقابلِ تلافی نقصان پہنچا دیا ہے۔ اسٹیبلشمنٹ کی کھلی سنگی اور جارحانہ حمایت حاصل ہونے کے باوجود عوام کوریلیف نہیں ملا، بلکہ خود ریاستی اداروں کی ساکھ کو بڑا نقصان پہنچا دیا گیا  ہے۔ پارلیمنٹ، آئینی جمہوری، سیاسی عمل، معیشت اور ریاستی نظام بری طرح متاثر ہے۔ اسٹیٹس کو بدتر اور مہنگائی و بے روزگاری عذاب بن گئی ہے وہ یزمان روڈ پر جامع مسجدالمغفرہ میں دو روزہ تربیت گاہ میں ضلع بھر ارکان و کارکنان سے خطاب کر رہے تھے۔انہوں نے کہا کہ آئین کے مطابق حکومت کو پانچ سال کی مدت حاصل ہے، لیکن جب حکومت نااہل، ناکام ہو، قومی وحدت، قومی سلامتی اور ریاستی اداروں کو بڑا نقصان لاحق ہو تو آئین ہی کے مطابق نااہل قیادت کی تبدیلی اور قبل از وقت انتخابات کا راستہ موجود ہے۔ عمران خان خود کہتے تھے کہ عوامی احتجاج، حکومت کے پاس غیرت ہو تو وہ مستعفی ہو جائے۔ اب مہنگائی، بے روزگاری، لاقانونیت، کرپشن، رشوت سے ہر طبقہ سراپا احتجاج ہے۔ اب عمران خان گھبرائیں نہیں آئینی راستہ اختیار کریں اور اقتدار سے چمٹنے کی بجائے استعفیٰ دیں۔ امیر جماعت اسلامی جنوبی پنجاب راؤ محمد ظفر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آج کا نوجوان بیروزگاری کا شکار،مایوسی،غربت اور ظلم و ستم کا شکار ہے۔ پاکستان کے پاس وسائل کی کوئی کمی نہیں بندرگاہیں،پہاڑی سلسلہ ایک بڑا میدانی علاقہ،پاکستان ایک زرعی مملکت ہے مگر غربت بیروزگاری میں پھنسے ہوئے ہیں۔بحیثیت قوم ہم تقسیم ہیں پاکستان کو آج قیادت کی ضرورت ہے وہ قیادت جماعت اسلامی کی صورت میں ممکن ہے۔نائب امیر جنوبی پنجاب ثناء اللہ سہرانی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ قوم کے پاس واحد راستہ سٹیٹس کو سے نجات ہے۔ ماموں بھانجا، بہن بھائی اور باپ بیٹا کی سیاست کرنے والے دہائیوں سے عوام پر مسلط ہیں۔ کوئی اپوزیشن میں ہے تو کوئی حکومت میں۔ ہماری نسلیں حکمران اشرافیہ کی نسلوں کی غلام ہیں اور اگر ایسا ہی چلتا رہاتو ہماری آنے والی نسلیں بھی ان وڈیروں اور جاگیرداروں کی غلامی میں ہی زندگی بسر کریں گی۔جنرل سیکرٹری جنوبی پنجاب صہیب عمار صدیقی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آڈیٹر جنرل کی رپورٹ کے مطابق حکومت کو ملنے والے کرونبا ریلیف فنڈز میں 40 ارب روپے کی کرپشن سامنے آئی ہے حکومت اپنے اللے تلوں کے لیے اب تک 16 ارب ڈالر قرض لے چکی ہے یوٹیلٹی سٹور کارپوریشن کے 50 ارب کے بجٹ میں صرف 10 ارب جاری کیے گئے ہیں اس میں بھی 5 ارب کرپشن کی نظر ہو گئے ہیں اسی طرح اپنا گھر ہاؤسنگ منصوبہ بھی مستقبل میں ایک میگا کرپشن منصوبہ ثابت ہوگا۔نائب امیر جنوبی پنجاب سید ذیشان اختر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم جتنی بھی اچھی تقریر کر لیں عوام کی مشکلات کم نہیں ہوں گی۔ ایک کروڑ نوکریاں دینے کا اعلان کیا گیا اور 36لاکھ نوجوان بے روزگار ہو گئے۔ 50لاکھ گھر بنانے کا دعویٰ کیا گیاہزاروں لوگ بے گھر کر دیے گئے۔وزیراعظم ہاؤس کو یونیورسٹی بنانے کا اعلان ہوا، مگر اب وزیراعظم اپنے گھر سے ہیلی کاپٹر کے ذریعے دفتر جاتے ہیں اور قوم پر احسان کر رہے ہیں کہ انھوں نے وقت بچایا۔تربیت گاہ سے جے آئی کسان پاکستان کے چیئر مین جام حضور بخش لاڑ،عرفان انجم،نصراللہ ناصر،عبدالجلیل ہاشمی،طاہر چوہدری و دیگر نے بھی خطاب کیا۔

ابراہیم خان

مزید :

ملتان صفحہ آخر -