دماغی صحت اور ماحولیاتی سائنس کو شامل کیا جانا چاہیے،فیصل سلطان

دماغی صحت اور ماحولیاتی سائنس کو شامل کیا جانا چاہیے،فیصل سلطان

  

 راولپنڈی (خصوصی رپورٹ)فاہ انسٹی ٹیوٹ آف لائف اسٹائل میڈیسن نے پاکستان ایسوسی ایشن آف لائف اسٹائل میڈیسن کے تعاون سے 2 سے 5 دسمبر تک رفاہ انٹرنیشنل یونیورسٹی اسلام آباد  کےI-14 کیمپس کیمرکزی آڈیٹوریم میں " لائف اسٹائل میڈیسن کا مدافعتی نظام پررول" کے موضوع پر اپنی پہلی بین الاقوامی ہائبرڈ کانفرنس کا انعقاد کیا۔۔ تقریباً 300 سے زیادہ مندوبین نے ذاتی طور پر اور 100 سے زیادہ نے آن لائن کانفرنس میں شرکت کی۔وزیراعظم کے معاون خصوصی ڈاکٹر فیصل سلطان نے کہا کہ ہسپتالوں پر بیماریوں کے بوجھ کو سنبھالنے کیلئے طبی نظام کے طرز عمل میں تبدیلی، دماغی صحت اور ماحولیاتی سائنس کو شامل کیا جانا چاہیے۔ انہوں نے کانفرنس کی افتتاحی تقریب میں ویڈیو پیغام کے ذریعے اپنے خیالات کا اظہار کیا۔کانفرنس میں اسلام آباد اور لاہور کی مختلف یونیورسٹیوں کے چانسلر، وائس چانسلرز، ڈینز، ڈائریکٹرز اور مختلف شعبوں کے سربراہان نے شرکت کی۔ پاکستان میں لائف اسٹائل میڈیسن موومنٹ کی بانی ڈاکٹر شگفتہ فیروز نے اپنے خیرمقدمی پیغام میں ہماری صحت کی دیکھ بھال میں لائف اسٹائل میڈیسن کو اپنانے کی اہمیت اور اس کی عالمی تحریک کے بارے میں بتایا۔چانسلر رفاہ انٹرنیشنل یونیورسٹی جناب حسن محمد خان نے پوسٹ گریجویٹ اور انڈر گریجویٹ سطحوں پر لائف اسٹائل میڈیسن پڑھانے پر زور دیا۔ انہوں نے اس سائنس کو فوری طور پر قائم کرنے کیلئے میڈیسن اور اس سے منسلک ہیلتھ سائنسز کی تعلیم دینے والی تمام یونیورسٹیوں کے ساتھ تعاون کی اہمیت پر بھی زور دیا۔ہیلتھ سروسز اکیڈمی کے وائس چانسلر ڈاکٹر شہزاد علی خان نے کہا کہ لوگوں کی نفسیات میں تبدیلی سے ان کے طرز زندگی میں تبدیلی آئے گی اور انہوں نے رفاہ یونیورسٹی کے ساتھ لائف اسٹائل میڈیسن موومنٹ میں تعاون کرنے کی پیشکش کی۔ مہمانِ خصوصی ڈاکٹر جنرل مسعود الرحمان کیانی، صدر PANAH نے احتیاطی امراض قلب میں طرز زندگی میں تبدیلی کی اہمیت پر روشنی ڈالی۔ برٹش لائف اسٹائل میڈیسن سوسائٹی روب لاسن نے بیماریوں سے بچاؤ اور انتظام میں صحت مند طرز زندگی کی اہمیت کے بارے میں اپنے خیالات کا اظہار کیا۔

مزید :

صفحہ آخر -