پاکستانی کمیونٹی  کی مختلف تنظیموں کے سربراہان کی سیالکوٹ میں سری لنکن شہری کے قتل کی مذمت

پاکستانی کمیونٹی  کی مختلف تنظیموں کے سربراہان کی سیالکوٹ میں سری لنکن شہری ...
 پاکستانی کمیونٹی  کی مختلف تنظیموں کے سربراہان کی سیالکوٹ میں سری لنکن شہری کے قتل کی مذمت

  

ویانا(اکرم باجوہ)ویانا میں پاکستانی کمیونٹی  کی مختلف تنظیموں کے سربراہان نے سیالکوٹ لیدر فیکٹری میں سری لنکن شہری کے قتل کی شدید مذمت کی ہے۔

 آسٹریا میں پاکستانی کمیونٹی کی تنظیموں کے مختلف سربراہان منہاج القرآن آسٹریا کے سرپرست اعلیٰ الحاج خواجہ محمد نسیم،پاک فرینڈز آسٹریا کے مرکزی چیرمین حاجی قمر حسین چوہدری،مسلم لیگ ن آسٹریا کے صدر چوہدری علی شرافت،مسجد البلال ویانا کے سربراہ الحاج محمد اکرم بٹ،پاکستان انجمن فیملیز کے صدر الحاج شیخ وحید احمد قریشی نے مشترکہ طور پر اپنے بیان میں کہا کہ سیالکوٹ میں سری لنکن شہری کو مبینہ طور پر توہین مذہب کے الزام میں قتل کرنے کی شدید مذمت کرتے ہیں۔خواجہ محمد نسیم نے اپنے بیان میں کہا کہ اس اقدام سے نہ صرف پاکستان میں رہنے والوں بلکہ تمام دنیا میں آباد اوورسیز پاکستانیوں کے سر بھی شرم سے جھک گئے ہیں  سزا دینے کا اختیار آخر اس جھتہ کو  کس نے دیا۔چوہدری علی شرافت نے کہا کہ سری لنکا کے شہری کے ساتھ جو سلوک ہوا اور جس طرح اس کی لاش کی بے حرمتی کرکے جلا دیا گیا وہ سوچ کر ہی روح کانپ اٹھتی ہے اگر حکومت نے گزشتہ دنوں پولیس کے قاتلوں معاف نہ کیا ہوتا تو آج یہ دن ہمیں نہیں دیکھنا پڑتا اس واقعہ سے حکومت کی آنکھیں کھل جانی چاہئیں کہ ایک کالعدم تنظیم کے اگے ہتھیار کس طرح ڈالے تھے اس حکومت کو لایا ہی اس لیے گیا تھا کہ پاکستان کے امیج کو مزید خراب کیا جائے۔حاجی قمر حسین چوہدری نے کہا کہ اس قسم کے واقعات پہلے بھی ہوچکے ہیں اور  آئندہ ان جیسے واقعات کو کیسے روکنا ہے لیکن ان کے تدارک کی ذمہ داری حکومت کی ہے بہتر ہوگا جن افراد پر قتل کی ذمہ داری عائد ہو انہیں اسی مقام پر پھانسی پر لٹکایا جائے۔الحاج شیخ وحید احمد قریشی نے کہا کہ زمہ داروں کو سزا دی جائے تاکہ آئندہ کوئی بھی شخص قانون کو ہاتھ میں لینے سے پہلے سو بار سوچے جب تک ایسا نہیں ہوگا یہ ظلم ہوتا رہے گا۔

مزید :

تارکین پاکستان -