ماڈل ٹاؤن کچہری سے ملزمان کے فرار ہونے کا معاملہ، آئی جی پنجاب نے ذمہ داران کے خلاف بڑا ایکشن لے لیا

ماڈل ٹاؤن کچہری سے ملزمان کے فرار ہونے کا معاملہ، آئی جی پنجاب نے ذمہ داران ...
ماڈل ٹاؤن کچہری سے ملزمان کے فرار ہونے کا معاملہ، آئی جی پنجاب نے ذمہ داران کے خلاف بڑا ایکشن لے لیا

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن) آئی جی پنجاب راؤ سردار علی خان  ماڈل ٹاؤن کچہری سے قیدیوں کے فرار ہونے کے واقعہ پر سخت ایکشن لیتے ہوئے ڈی ایس پی اسد محمود کو معطل کردیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق ماڈل ٹاؤن کچہری  سے پولیس کی نااہلی کے باعث متعدد ملزمان فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے تھے۔ملزمان کے فرار ہونے کی فوٹیج بھی سامنے آئی تھی۔ راؤ سردار علی خان نے ماڈل ٹاؤن کچہری سے قیدیوں کے فرار ہونے کے واقعہ نوٹس لیتے ہوئے سی سی پی او لاہور سے واقعہ کی رپورٹ طلب کی ہے۔ آئی جی پنجاب نے سخت ایکشن لیتے ہوئے سکیورٹی ڈیوٹی پر مامور ذمہ داران کو معطل کرکے محکمانہ انکوائری کا حکم دے دیا ہے۔ راؤ سردارعلی خان نے کہا کہ دوران ڈیوٹی غفلت کا مظاہرہ کرنے والے کسی رعائیت کے مستحق نہیں۔

ایس ایس پی آپریشنز کیپٹن (ر) مستنصر فیروز نے واقعہ کے متعلق میڈیا نمائندگان سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ آج دو جیلوں سے 166ملزمان کو ماڈل ٹاؤن کچہری میں پیشی کیلئے لایاگیا تھا جنہیں بخشی خانے میں بند کیا گیا تو دو گروپوں کا آپس میں تصادم ہوا، سیکیورٹی ٹیم نے تصادم پر قابو پانے کیلئے قیدیوں کو باہر نکالا تو اس دوران ملزمان بے قابو ہوئے اور انہوں نے پولیس افسران کے ساتھ جھگڑا کیا۔ پتھر پھینکے اور کرسیاں، میز جو بھی سامان موجود تھے اس سے حملہ آور ہوئے۔ اسی اثناء میں بارہ ملزمان فرار ہوئے جن میں سے دو ملزمان کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔ایس پی ماڈل ٹاؤن سرچ آپریشن کی خود نگرانی کر رہے ہیں اور ہماری کوشش ہوگی کہ تمام ملزمان کو آج ہی دوبارہ گرفتار کرلیا جائے۔ قیدیوں کی سیکیورٹی ٹیم کی انٹرنل اکاؤنٹیبلیٹی بھی شروع ہوگئی ہے جس کی روشنی میں انکے خلاف مزید کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔

انکا کہنا تھا کہ جن قیدیوں نے یہ شرارت کی ہے، انکے خلاف ایف آئی آر درج کرکے مزید کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔ فرار ہونے والے ملزمان سنگین مقدمے کے ملوث نہیں، دو ملزمان پرموٹر سائیکل چھیننے کے مقدمات درج ہیں،ایک رابری اور سنیچنگ اور دو غیر قانونی اسلحے کیس کے ملزم ہیں جبکہ دیگر ملزمان بھی اسی نوعیت کے کیسز میں ملوث ہیں۔ ملزمان کی دوبارہ گرفتاری کیلئے ٹیمیں آپریشن کررہی ہیں اور انہیں بہت جلد گرفتار کرکے قانون کے کٹہرے میں پیش کردیا جائے گا۔

مزید :

جرم و انصاف -علاقائی -پنجاب -لاہور -