سول جج کی اہلیہ کے تشدد کا شکار بچی رضوانہ کو آج ہسپتال سے ڈسچارج کیا جائے گا

سول جج کی اہلیہ کے تشدد کا شکار بچی رضوانہ کو آج ہسپتال سے ڈسچارج کیا جائے گا
سول جج کی اہلیہ کے تشدد کا شکار بچی رضوانہ کو آج ہسپتال سے ڈسچارج کیا جائے گا
سورس: File Photo

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور (ویب ڈیسک) اسلام آباد میں سول جج کی اہلیہ کے تشدد کا شکار کمسن گھریلو ملازمہ رضوانہ  5 ماہ زیرعلاج رہنے کے بعد مکمل صحتیابی پرآج ہسپتال سے ڈسچارج ہو جائیں گی۔

جیو نیوز کے مابق امیرالدین میڈیکل کالج کے پرنسپل ڈاکٹر فرید ظفر نے بتایا کہ رضوانہ 5 ماہ زیر علاج رہیں، اب وہ مکمل طور پر صحتیاب ہوچکی ہیں، رضوانہ کو سر، چہرے اور کمر پر زخموں کے ساتھ جنرل ہسپتال لایا گیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ 5 ماہ مسلسل زیر علاج رہنے کے بعد اب وہ بہتر ہوچکی ہیں، اپنے قدموں پر چلتی ہے اور ان کی مسکراہٹ بھی لوٹ آئی ہے۔

چائلڈ پروٹیکشن بیورو کی چیئرپرسن سارہ احمد نے بتایا کہ رضوانہ ڈسچارج ہوکر اپنے گھر سرگودھا نہیں جائیں گی بلکہ انہیں ہسپتال سے چائلڈ پروٹیکیشن بیورو  منتقل کیا جائے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ عدالت نے انہیں چائلڈ پروٹیکشن بیورو کے سپرد کیا ہے، رضوانہ کو تعلیم، خوراک اور دیگر سہولیات چائلڈ پروٹیکشن بیورو مہیا کرے گا۔