کشمیر کارواں میں گونگے بہرے افراد کے زیر اہتمام خصوصی افراد کی شرکت

کشمیر کارواں میں گونگے بہرے افراد کے زیر اہتمام خصوصی افراد کی شرکت

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


 لاہور ( این این آئی )کشمیر کارواںکے اختتام پر ہائیکورٹ چوک مال روڈ پر ایک بڑے جلسہ عام کا انعقاد کیا گیا۔ ٭کشمیر کارواں میں لاہور اور اس کے گردو نواح سے ہزاروں افراد شریک ہوئے ۔ شرکاءمیں زبردست جوش و خروش دیکھنے میں آیا۔ ٭کارواںکے چاروں طرف جماعة الدعوة کے کارکنان سیکورٹی کے فرائض سرانجام دیتے رہے جبکہ پولیس کی بھاری نفری اور قانون نافذ کرنے والے دیگر اداروں کے اہلکار بھی سول کپڑوں میں موقع پر موجود رہے ۔ ٭شرکاءکے جی پی او چوک پہنچنے پر لاہور ہائی کورٹ کے وکلاءکی بڑی تعداد نے ان کا بھرپور استقبال کیا۔ ٭ انارکلی، مال روڈ اور ہال روڈ کے تاجروں کی طرف سے بھی کشمیر کارواں کے شرکاءسے بھر پور یکجہتی کا اظہار کیا گیا۔ تاجر حضرات بڑی تعداد میں کشمیرکارواں اور جلسہ عام میں بھی شریک ہوئے۔تاجروں کی طرف سے خیر مقدمی بینرز بھی لگائے گئے تھے۔٭ شرکاءکی جانب سے سید علی گیلانی اور حافظ محمد سعید سے رشتہ کیا لا الہ الا اللہ کے فلک شگاف نعرے لگائے جاتے رہے ۔٭ کارواں میں جماعةالدعوة شعبہ گونگے بہرے افراد کے زیر اہتمام خصوصی افراد نے بھی شرکت کی جنہیں اشاروں کی زبان میںمقررین کے خطابات کا ترجمہ کر کے سمجھایا جاتا رہا۔ شرکاءانتہائی دلچسپی سے انہیں دیکھتے نظر آئے۔٭ کارواں کے دوران مال روڈ پر آنے والے تمام داخلی راستوں سے کسی کو آنے کی اجازت نہیں دی گئی۔ پولیس کی بھاری نفری موقع پر ہمہ وقت موجود رہی۔ ٭ المحمدیہ سٹوڈنٹس کے ہزاروں طلباءنے بھی کشمیر کارواں اور جلسہ عام میں بھرپور انداز میں شرکت کی۔٭ شاہراہ قائداعظم اور پنڈال کو جماعة الدعوة کے کلمہ طیبہ والے پرچموں اور بڑے بڑے بینرز سے خوبصورت انداز میں سجایا گیا تھا ۔٭ جماعة الدعوة کے مختلف مقامات پر لگائے گئے ہورڈنگز جن پر ”کشمیر ہمارا ہے سارے کا سارا ہے “ اور ”کشمیری مجاہدین کی عظمت کو سلام “ کی تحریریں درج تھیں لوگوں کی توجہ کا مرکز بنے رہے ۔٭ کشمیر کانفرنس میں مقبوضہ کشمیر میں شہید ہونے والے کشمیری مجاہدین کے سینکڑوں ورثاءبھی شریک ہوئے ۔٭ کشمیر کارواں اور جلسہ کے موقع پر فلاح انسانیت فاﺅنڈیشن کی ایمبولینسیں مجمع کے ارد گرد موجو د رہیں ۔٭ جماعة الدعوة کے کارکنان خصوصی طور پر تیار کردہ فلوٹس کے ذریعے لوگوں کو کشمیر کانفرنس میں شرکت کی ترغیب دیتے رہے جبکہ اہم چوکوں ، چوراہوں اور دیگر پبلک مقامات پر کشمیر کے حوالہ سے ہینڈبلز اور دیگر لٹریچر تقسیم کرنے کا سلسلہ بھی جاری رہا ۔



مزید :

صفحہ اول -