وہ آدمی جسے دریا ئی گھوڑے نے نگل لیا،لیکن وہ پھربھی معجزانہ طور پر زندہ بچ گیا

وہ آدمی جسے دریا ئی گھوڑے نے نگل لیا،لیکن وہ پھربھی معجزانہ طور پر زندہ بچ ...
 وہ آدمی جسے دریا ئی گھوڑے نے نگل لیا،لیکن وہ پھربھی معجزانہ طور پر زندہ بچ گیا

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

ہرارے(نیوزڈیسک)زمبابوے کے ایک شہری جس پر ایک دریائی گھوڑے نے کچھ دن قبل حملہ کردیا تھا اور اسے کھا ہی گیا تھا لیکن قسمت اس پر مہربان ہوئی اور اس کی جان بچ گئی، کا کہنا ہے کہ اس نے کبھی بھی اتنا خوفناک وقت نہیں دیکھا۔ وہ کہتا ہے کہ وہ اور اس کے دوست مائیک، بین اور ایونزکچھ گاہکوں کو لے کر وکٹوریا فالزکے قریب واقع زیم بیزی دریا سے گزر رہے تھے جس دوران ایک دریائی گھوڑے نے ان پر حملہ کردیا۔اس کا کہنا تھا کہ حملہ اس قدر خوفناک تھا کہ انہیں سنبھلنے کا موقع ہی نہ ملا۔ اس کے دوست ایونزدریائی گھوڑے کے حملے کے بعد ہوا میں لہراتا ہوا دریا میں گرا جب کہ وہ خود بھی پانی کے اندر تھا۔ اس شخص کا کہنا ہے کہ دریا میں خون پھیل چکا تھا اور وہ زخموں سے چور تھالیکن دریائی گھوڑا پھر حملہ آور ہوا ار اس بار وہ زیادہ غصے میں تھا اور لگ رہا تھا کہ وہ اسے آج ہلاک کرکے رہے گا،دریائی گھوڑے نے اسے اپنے منہ میں لے لیا اور کمر تک نگل چکا تھا اور اسی حالت میں وہ اسے پکڑ کر دریا کی تہہ میں لے گیا،نہ جانے وہ کتنی دیر تک پانی کی تہہ میں رہا لیکن پھر خود ہی اس نے اسے باہر الٹ دیا اور اس کے دوست مائیک اسے محفوظ مقام پر لے گیا۔ اس شخص کا کہنا ہے کہ اس کے دونوں بازو بالکل چور ہو چکے تھے ،اس کے جسم سے جگہ جگہ خون بہہ رہا تھا جب کے کمر سے اس کا ایک پھیپھڑا بھی نظر آرہا تھا۔اسے قریبی ہسپتال لے جایا گیاجہاں ڈاکٹروں نے اس کی جان بچانے کے لئے اس کا ایک بازو کاٹ دیا۔ڈاکٹروں کے مطابق اس کے جسم پر 40سے زائد زخم آئے تھے۔اس کے دوست آئیون کی لاش دو دن بعد دریا کے باہر سے ملی۔حکام خطرناک دریائی گھوڑے کو ہلاک کرنے کی کوشش کر رہے ہیں لیکن ابھی تک کامیابی نہیں مل سکی۔

مزید :

صفحہ آخر -