میو ہسپتال کی نرس کو بد اخلاقی کے بعد قتل کیا گیا ،نامزد ملزم گرفتارنہ ہو سکا

میو ہسپتال کی نرس کو بد اخلاقی کے بعد قتل کیا گیا ،نامزد ملزم گرفتارنہ ہو سکا

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لا ہور (کرا ئم سیل ) میو ہسپتا ل کی نرس نادیہ محمود کومبینہ طو ر پر بد اخلا قی کے بعد قتل کیا گیا ،پولیس نا مزد ملزم کو گرفتا ر کر نے میں تا حا ل کا میا ب نہ ہوسکی ؂،ور ثا کا پو لیس کے خلاف احتجا جی مظا ہر ہ ۔ انچا ر ج انویسٹی گیشن شیخ اکمل نے نما ئند ہ’’ پاکستا ن‘‘ کو بتا یا کہ ملزم کی گرفتا ر ی کے لئے چھا پے ما رے جا رے ہیں ،خا تو ن سے بد اخلا قی کی تصد یق ہو گئی ہے ۔ تفصیلا ت کے مطا بق پاکپتن کی رہائشی تیس سالہ نادیہ محمود مریضوں کی خدمت کا جذبہ لیے لاہور آئی تھی اور میوہسپتا ل کے انتہائی نگہداشت کے وارڈمیں تعینات تھی۔31 جنوری کو ڈیوٹی کے بعدنادیہ اچانک لاپتہ ہوگئی تھی،یکم فروری کو مقتولہ کی لاش ملی جس کواس کے اہلخانہ کے سپرد کیاگیا۔ غسل کے دوران مقتولہ کے جسم پر تشدد کے نشانات نمایاں نظر آئے جس پر ورثا نے پولیس کو مطلع کیا، پولیس کی ابتدائی تفتیش میں کہاگیا کہ مقتولہ کو مبینہ بد اخلا قی کانشانہ بنایاگیا۔ملزم تحسین بھی میوہسپتا ل میں ملازم ہے،پولیس نے دفعہ تین سو دو کا مقدمہ درج کرکے ملزم تحسین کی گرفتاری کیلئے چھاپے مارنا شروع کردئیے ہیں۔

مزید :

علاقائی -