اردن کے باد شاہ نے خود داعش کیخلاف خود میدان جنگ میں اترنے کا فیصلہ کر لیا

اردن کے باد شاہ نے خود داعش کیخلاف خود میدان جنگ میں اترنے کا فیصلہ کر لیا
اردن کے باد شاہ نے خود داعش کیخلاف خود میدان جنگ میں اترنے کا فیصلہ کر لیا

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اومان (مانیٹرنگ ڈیسک) داعش کی جانب سے اردن کے نوجوان پائلٹ کو زندہ جلائے جانے کے بعد پورے ملک میں شدید اشتعال پھیل چکا ہے اور مقامی میڈیا کا کہنا ہے ملک کے سربراہ کنگ عبداللہ داعش کے خلاف جاری فضائی کارروائی میں خود حصہ لیں گے۔

شام کے دارلحکومت میں فوج اور باغیوں کے درمیان لڑائی، 23 افراد جاں بحق
کنگ عبداللہ نے اپنے حالیہ خطاب میں داعش کے خلاف سخت ترین کارروائی کے عزم کا اظہار کیا۔ انہوں نے ایک مشہور فلم "Unforgiven" کے ایک کردار کے الفاظ دہراتے ہوئے کہا ”مجھے اب جو بھی شخص نظر آیا میں اسے ہلاک کردوں گا۔ جو مجھ پر گولی چلائے گا میں نہ صرف اسے ہلاک کروں گا بلکہ میں اس کی بیوی کو ہلاک کروں گا، میں اس کے دوستوں کو ہلاک کروں گا اور اس کے گھر کو جلا دوں گا۔“ ان کا کہنا تھا کہ داعش کو ایسی سزا ملنے والی ہے کہ جس کا اس نے کبھی تصور بھی نہ کیا ہوگا۔ اردن کے مقامی میڈیا کے مطابق کنگ عبداللہ ایک تربیت یافتہ فائٹر پائلٹ ہیں اور میڈیا کے مطابق پائلٹ کے ساتھ داعش کے ناقابل بیان سلوک کے بعد انہوں نے فیصلہ کیا ہے کہ وہ خود فضائی کارروائی میں حصہ لیں گے۔ اردن کے حکام کا یہ بھی کہنا ہے کہ پائلٹ کے قتل کا بدلہ لینے کے لئے داعش کو صفحہ ہستی سے مٹادیا جائے گا اور اس عزم میں ملک کے سربراہ کنگ عبداللہ سب سے آگے ہیں۔
اردن کے پائلٹ معاذ الکساسبہ کا F16 جہاز گزشتہ ماہ شمالی شام پر پرواز کے دوران گر کر تباہ ہوگیا تھا جس کے بعد جنگجوﺅں نے انہیں قیدی بنالیا تھا۔ بدھ کے روز مبینہ طور پر داعش کی طرف سے سامنے آنے والی ایک ویڈیو میں دکھایا گیا تھا کہ پائلٹ کو زندہ جلا کر ہلاک کردیا گیا۔