کشمیر سینٹرکے زیر اہتمام دستخطی مہم،سینکڑوں افراد نے حصہ لیا

کشمیر سینٹرکے زیر اہتمام دستخطی مہم،سینکڑوں افراد نے حصہ لیا

  



لاہور(پ ر)کشمیرلبریشن سیل کشمیر سنٹر لاہور کے زیراہتمام یوم یکجہتی کشمیر زبردست جوش و خروش کے ساتھ منایا گیا اورمظلوم کشمیریوں کو بھرپوریقین دلایا گیا کہ کشمیری اپنی تحریک آزادی میں تنہا نہیں ہیں بلکہ پوری پاکستانی قوم ان کے ساتھ ہے۔ بھارت کو باور کرایا گیا کہ وہ کشمیریوں کو تنہا نہ سمجھے پاکستانی قوم کشمیریوں کی بھرپور سفارتی ،اخلاقی اور سیاسی حمایت کرتی ہے۔ کشمیر سنٹر لاہور کے زیر اہتمام پنجاب اسمبلی کے سامنے چیئرنگ کراس پر کیمپ لگایا گیا جس میں غیرملکی یورپی شہری‘ ایم این اے رخسانہ نور ‘ حریت رہنما مشتاق محمود‘ سائرہ بانو‘ زرقا نسیم‘ زرقا حیدر‘ فاروق آزاد‘ راجہ شہزاد‘ منظور گیلانی‘ راجہ شیرزمان‘ عامر جرال‘ صادق جرال‘ شفیق رضا قادری‘ خواجہ سیف سمیت مختلف سیاسی و سماجی جماعتوں کے قائدین ‘کارکنوں اور عام شہریوں کی بڑی تعداد کی آمد کا سلسلہ دن بھر جاری رہا۔

شرکاء کے فلگ شگاف نعروں ’’کشمیر بنے گا پاکستان‘‘ہم لے کے رہیں آزادی‘‘مودی ہمارا کشمیر چھوڑدو‘‘ کشمیر میں ظلم بند کرو‘‘کشمیرکی آزادی تک جنگ رہے گی‘‘ سے فضا گونجتی رہی ۔ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کی شدید مذمت کے لیے کشمیر سنٹر کے زیر اہتمام دستخطی مہم بھی منعقد کی گئی جس میں سیاسی رہنماؤں‘ شہریوں،دانشوروں اور سیاسی کارکنوں کی بڑی تعدادنے حصہ لے کر بھارتی جارحیت اور ظالمانہ اقدامات کے خلاف بھرپور نفرت کا اظہارکیا۔اس موقع پر منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مختلف قائدین نے کہا کہ بھارت اور مودی کو سوچنا چاہیے کہ کشمیری ان کے ساتھ کبھی تھے،نہ ہیں اور نہ رہیں گے۔انہوں نے کہا کہ کشمیری صرف اور صرف بھارت سے آزادی چاہتے ہیں۔ گزشتہ روز بھارتی وزیراعظم کے دورہ مقبوضہ کشمیر کے موقع پر پوری وادی کو فوجی چھاؤنی میں تبدیل کر دیا گیا۔جگہ جگہ ناکے لگا کر نہتے اور معصوم شہریوں کی آمد و رفت پر پابندی لگا دی گئی۔اگر کشمیری بھارت کا قبضہ تسلیم کرلیتے تو بھارتی حکمرانوں کو کشمیر میں گھومنے پھرنے اور تقریبات منعقد کرنے کی آزادی حاصل ہوتی۔ مقررین نے کہا کہ عالمی برادری کشمیریوں کوجلد از جلد بنیادی حق’’حق خود ارادیت‘‘دلوائے ورنہ کہیں ایسا نہ ہو کہ مسئلہ کشمیر کا آتش فشاں پورے جنوبی ایشیا کے امن کو اپنی لپیٹ میں لے کر تباہ کر دے۔اس موقع پر جموں وکشمیر لبریشن سیل کی مطبوعات کا اسٹال بھی لگا یاگیا جس میں بھی شہریوں کی بڑی تعداد نے دلچسپی کا اظہار کیا اور کشمیر سنٹر لاہور کے ان اقدامات کو سراہا۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...