بھارت برطانوی پارلیمنٹ میں کشمیر کانفرنس رکوانے میں ناکام، بھارتی بربریت کیخلاف قرار داد متفقہ منظور

بھارت برطانوی پارلیمنٹ میں کشمیر کانفرنس رکوانے میں ناکام، بھارتی بربریت ...

  



لندن(مانیٹرنگ ڈیسک ،آئی این پی ) لندن کانفرنس میں مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کے خلاف مذمتی قرارداد متفقہ طور پر منظور کرلی گئی،قرارداد میں مطالبہ کیا گیا کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کی پیلٹ گنز فائرنگ سے متاثر ہونے والے افراد کو فوری طبی امداد فراہم کی جائے، مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل کیا جائے، کیونکہ مسئلہ حل نہ ہونے سے نہ صرف کشمیریوں کی مشکلات میں اضافہ ہوا بلکہ یہ معاملہ خطے کی سلامتی کیلئے بھی خطرہ ہے،مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں روکنے میں کردار ادا کرے۔ تفصیلات کے مطابق نہتے کشمیریوں کی سسکیاں آج اراکین برطانوی ہاس کامن نے بھی سنیں۔ کشمیر کانفرنس کے حوالے سے ہونے والے اجلاس میں سابق وزیراعظم ناروے اور برطانوی پارلیمان نے خصوصی طور پر شرکت کی۔ کانفرنس میں مقررین نے مسئلہ کشمیر کی تاریخی حیثیت پر روشنی ڈالی اور وہاں جاری بھارتی مظالم کو بے نقاب کیا۔شرکا اجلاس نے کشمیریوں کی حالت زار پر سخت اظہار تشویش کرتے ہوئے انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر مذمتی قرارداد منظور کی۔قرارداد میں کہا گیا ہے مسئلہ کشمیر اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل کیا جائے۔ اجلاس میں عالمی برادری سے اپیل کی گئی ہے کہ وہ مقبوضہ کشمیر انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں رکوانے کے لیے اقدامات کرے، مسئلہ حل نہ ہونے سے کشمیریوں کی مشکلات میں اضافہ ہوا، مسئلہ کشمیرکا حل نہ ہونا خطے کی سلامتی کے لیے خطرہ ہے۔ قرارداد میں اس بات پر بھی زور دیا گیا ہے کہ پیلٹ گنز کے متاثرین کو فوری طبی امداد دی جائے۔دوسری طرف برطا نوی دارالحکومت لند ن میں برطانوی وزیراعظم کی رہائش گاہ ٹین ڈاؤننگ سٹریٹ کے باہرہزاروں افراد نے مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کے خلاف شدید احتجاج کرتے ہوئے بھارت مخالف نعرے بازی کی اور مطالبہ کیا کہ بھارت مقبوضہ وادی میں ریاستی دہشت گردی بند، کشمیر سے متعلق اقوام متحدہ کی قرار دادوں پر عملدرآمد کرے،عالمی برادری بھارت پر دباؤ ڈالے کہ وہ مقبوضہ کشمیر کے مظلوم عوام پر مظالم کاسلسلہ بند کرے۔ منگل کو بھارتی مظالم کے خلاف لندن میں برطا نوی وزیراعظم کے دفتر ٹین ڈاؤننگ سٹریٹ کے باہر شدید احتجاج کیا جس دوران مظاہرین نے احتجاجی مظاہرے کے دوران بھارت کے خلاف شدید نعرہ بازی کی ، احتجاج میں ہزاروں کی تعداد میں کشمیریوں اور پاکستانیوں نے شرکت کی۔ اس دوران مظاہرین نے کہا کہ بھارت مقبوضہ وادی میں ریاستی دہشت گردی بند کرے ۔ ہندوستان مسئلہ کشمیر سے متعلق اقوام متحدہ کی قرار دادوں پر عملدرآمد کرے۔ انہوں نے برطانیہ سمیت عالمی برادری پر زور دیا کہ وہ بھارت پر دباؤ ڈالے کہ وہ مقبوضہ کشمیر کے مظلوم عوام پر مظالم کاسلسلہ بند کرے اور انہیں اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قرار دادوں کے مطابق اپنا حق خودارادیت سے ۔ بین الاقوامی برادری اس سلسلے میں اپنا کردا ر ادا کرے ۔

کشمیر کانفرنس

لندن (مانیٹرنگ ڈیسک ،آئی این پی ) وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ مودی سرکار اجلاس رکوانے میں ناکام رہی، مظلوموں کی آہ و بکا برطانوی پارلیمنٹ تک پہنچ گئی،جذبہ حریت کو دہشت گردی کا نام دینے کا بھارتی ڈرامہ ناکام ہوگیا، پاکستان کی تمام سیاسی جماعتیں اس مسئلے پر ایک ہیں،بھارت کشمیر کو باہمی مسئلہ کہتا ہے اور پھر مذاکرات بھی نہیں کرتا۔ کشمیر کانفرنس کے بعد لندن میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئیوزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ بھارت کے کشمیری جذبہ حریت کودہشت گردی کا نام دینے کا ڈرامہ بے نقاب ہوگیا ہے، بھارت کے کشمیریوں پر ظلم و بربریت کو دنیا جان چکی ہے، کشمیریوں کی آواز پوری دنیا تک پہنچ چکی ہے۔ انہوں نے کہا اجلاس سے دنیا کو بڑا میسج چلا گیا، پاکستان کی تمام سیاسی جماعتیں اس مسئلے پر ایک ہیں، اجلاس میں مسئلہ کشمیر پر متفقہ قرارداد منظور کی گئی۔ قبل ازیں شاہ محمود قریشی نے لندن میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ لندن کی کشمیر کانفرنس میں برطانوی پارلیمنٹ کے اراکین کی بڑی تعداد میں شرکت خوش آئند ہے۔ عالمی کشمیر کانفرنس میں ہمارے موقف کی تائید کی گئی ہے۔ شاہ محمود قریشی نے کشمیر کانفرنس کو کشمیریوں اور پاکستانی عوام کی فتح قرار دیا۔انہوں نے کہا کہ آج نہ صرف کشمیریوں کی سسکیاں ہا ؤ س آف کامنز میں سنی گئی ہیں بلکہ کشمیریوں کی آواز اب پوری دنیا تک پہنچ چکی ہے اور پاکستان کی سیاسی جماعتوں نے ثابت کیا ہے کہ اختلافات کے باوجود مسئلہ کشمیر پر ہم سب ایک ہیں اور پانچ فروری کو جماعتیں یوم یکجہتی کشمیر مناتی ہیں مسلم لیگ (ن) کے سینیٹر مشاہد حسین سید نے کشمیر کانفرنس سے خطاب میں کہا کہ وقت آگیا ہے کہ مسئلہ کشمیر کو مستقل حل کیا جائے‘ بھارت اور پاکستان نے اقوام متحدہ کی قرارداد میں کشمیریوں کے حق خود ارادیت کو تسلیم کیا ہے‘ کوریا سے لیکر کابل تک پورے ایشیاء میں تبدیلی کی ہوائیں چل رہی ہیں‘ مودی کے دورہ مقبوضہ کشمیر کے موقع پر عوام نے ان کا مکمل بائیکاٹ کیا‘ بھارت کو مقبوضہ کشمیر میں حالات کا از سر نو جائزہ لینا ہوا‘ طاقت کے استعمال سے کشمیریوں کو روکا نہیں جاسکتا‘ برہان وانی اور کشمیری نوجوانوں کو ان کی قربانیوں پر خراج تحسین پیش کرتا ہوں۔ پاکستان پیپلز پارٹی کی رہنماء سینیٹر شیری رحمان نے کہا کہ مسئلہ کشمیر اقوام متحدہ کی قرارداد کے مطابق حل کیا جائے، مقبوضہ کشمیر میں ہونے والے ظلم و جبر کے اعدادوشمار تشویشناک ہیں، مسئلہ کشمیر پر پاکستان کی تمام سیاسی جماعتوں کا موقف ایک ہے سینیٹر شیری رحمان نے کہا کہ ہم کشمیریوں کی مکمل اخلاقی، سیاسی وسفارتی حمایت کے لئے یہاں آئے ہیں،شہید محترمہ بینظیر بھٹو نے 5 فروری یوم یکجہتی کشمیر منانے کا اعلان کیا تھا، مسئلہ کشمیر پر پاکستان کی تمام سیاسی جماعتوں کا موقف ایک ہے۔

مزید : صفحہ اول


loading...