نکے تھانیدار نے ڈیڑھ لاکھ رشوت لے کر درجن بھر قمار باز رہا کر دیئے

نکے تھانیدار نے ڈیڑھ لاکھ رشوت لے کر درجن بھر قمار باز رہا کر دیئے

  



لاہور (کرائم رپورٹر)سمن آباد پولیس کے نکے تھانیدار دلشاد نیازی نے درجن سے زائد قمار بازوں کو مقدمہ درج نہ کرنے کی پاداش میں رشوت کے طور پر مبینہ ڈیڑھ لاکھ روپے لیکر نہ صرف انھیں باعز ت رہا کر دیا بلکہ موقع سے پکڑا گیا اسلحہ اور دیگر سامان بھی واپس کر دیا ۔ افسوس ناک امر یہ ہے کہ مقامی ڈی ایس پی اور ایس پی اقبال ٹاؤن نے تمام حقائق سامنے آنے کے باوجود تھانیدار کے خلاف تاحال کوئی کارروائی نہیں کی جبکہ تھانیدار نے علاقے میں رشوت کا بازار گرم کر رکھا ہے اور اس کا کہنا ہے کہ وہ رشوت کی رقم میں سے ایس ایچ او سے لیکر ایس پی تک سبھی کو حصہ دیتا ہے ۔بتایا گیا ہے کہ 25اور 26جنوری کی درمیانی شب تھانہ سمن آباد کے اے ایس آئی نے شمع روڈ پر الائیڈ سکول کے بالمقابل قمار باز کاشی بٹ کے اڈے پر چھاپہ مارا جہاں دو درجن سے زائد قمار باز اپنے گھناؤنے جرم میں مصروف تھے تھانیدار نے وہاں سے اسامہ ،حافظ، کٹا اور سعید کو حراست میں لیکر موقع سے دو پسٹل ،ہزاروں روپے کی نقدی قبضے میں لے لی جبکہ مین قمار بازوں کو فرار کروا دیا حراست میں لیے گئے چاروں افراد کو تھانہ سمن آباد لے جایا گیا جہاں سعید کو کچھ دیر بعد رہا کر دیا گیا جبکہ باقی تینوں افراد کو حوالات میں بند کر کے فرارہونیوالے کاشی بٹ سمیت دیگر سے مقد مہ درج نہ کر نے کی پاداش میں ڈیڑھ لاکھ روپے ساز باز کر کے وصول کر لیے حراست میں لیے گئے افراد اور قبضے میں لیے گئے پسٹل بھی ڈیل کے تحت انہیں واپس کر دیے۔

زرائع نے دعوی کیا ہے کہ تھانیدار کاشی بٹ سے پہلے ہی روزانہ کی بنیاد پر دو ہزار روپے ریڈ نہ کر نے کا وصول کر رہا تھا اب اس نے یہ ریڈ روزانہ کی بنیاد پر وصول کی جانیوالی رقم کو بڑھانے کے لیا کیا تھا اس بارے میں مقامی ایس ایچ او رضا روف نے بتایا ہے کہ جیسے ہی انھیں لین دین کے عوض رہائی کا علم ہوا انھوں نے فوراً اپنے مقامی ڈی ایس پی اور ایس پی کو اطلاع کر دی ۔تاہم افسوس ناک امریہ ہے کہ 13روز گزر جانے کے باوجود تھانیدار سمیت کسی کے خلاف کوئی کا رروائی عمل میں نہیں لا ئی گئی۔مقامی لو گوں نے الزام لگایا ہے کہ تھانیدار نے علاقے میں رشوت کا بازر گرم کر رکھا ہے اور اس کا کہنا ہے کہ وہ مقامی افسران کا چہیتا ہے اور رشوت کی رقم میں سے سب کو حصہ بھی دیتا ہے مقا می لو گو ں نے آئی جی پو لیس ، سی سی پی او لا ہور ، ڈی آئی جی آپریشن اور ایس ایس پی آپریشن سے اس بات کا نو ٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے ۔

مزید : علاقائی


loading...