حکومت کو نوازشریف کو فی الحال واپس جیل نہ بھیجنے کا فیصلہ لیکن دراصل سابق وزیراعظم کو کیا بیماری ہے؟ میڈیکل رپورٹ کے مندرجات سامنے آگئے

حکومت کو نوازشریف کو فی الحال واپس جیل نہ بھیجنے کا فیصلہ لیکن دراصل سابق ...
حکومت کو نوازشریف کو فی الحال واپس جیل نہ بھیجنے کا فیصلہ لیکن دراصل سابق وزیراعظم کو کیا بیماری ہے؟ میڈیکل رپورٹ کے مندرجات سامنے آگئے

  



لاہور (ویب ڈیسک)محکمہ داخلہ پنجاب نے سابق وزیر اعظم نواز شریف کو فی الحال واپس کوٹ لکھپت جیل منتقل نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ یہ فیصلہ سپیشل میڈیکل بورڈ کی طرف سے میاں نواز شریف کی صحت کے حوالے سے جاری تازہ میڈیکل رپورٹ میں بتائے گئے خدشات کے پیش نظر کیا گیا ہے۔

روزنامہ جنگ نے  سپیشل میڈیکل رپورٹ کے حوالے سے بتایا کہ  میاں نواز شریف کو پہلے بھی ہارٹ اٹیک ہو چکے ہیں، وہ ریکرنٹ انجائنا کے مریض ہیں۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ نواز شریف کےگردے شوگر کی وجہ سے متاثر ہو رہے ہیں۔ پیدل چلتے ہیں تو انہیں چھاتی میں دردمحسوس ہوتا ہے۔ ان کے ٹیسٹوں میں پراسٹیٹ کینسر کے اثرات نہیں پائے گئے جبکہ پیشاب میں شوگر کی مقدار آئی ہے۔ میاں نواز شریف کی چھاتی کا ایکسرے نارمل ہے۔

سپیشل میڈیکل بورڈ کی طرف سے کئے جانے والے پیٹ کے الٹرا سائونڈ کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ کولیسٹرو لیول بڑھنے سے ان کی شریانوں میں چربی پائی گئی ہے جس سےشریانیں تنگ ہوگئی ہیں۔ میاں نواز شریف کے پائوں اور گردن کے الٹرا سائونڈ کی رپورٹ میں خون کیشریانوں میں تنگی پائی گئی ہے۔

مزید : قومی


loading...