نوجوان نے گھر میں گھس کر طالبہ کو زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا

نوجوان نے گھر میں گھس کر طالبہ کو زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا
نوجوان نے گھر میں گھس کر طالبہ کو زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا

  



شیخوپورہ (ویب ڈیسک) تھانہ سٹی بی ڈویژن کی آبادی نبی پورہ میں بااثر شخص کے اوباش بیٹے نے ایک محنت کش کے گھر گھس کر اس کی ساتویں جماعت کی طالبہ بیٹی کو زبردستی اپنی حوس کا نشانہ بنا ڈالا، بچی کی حالت نازک ہونے پر بااثر شخص نے محنت کش کی بیوی او رزیادتی کا شکار بچی کو زبردستی مقامی نجی ہسپتال میں ایک کمرے میں بند کردیا جہاں سے پولیس نے دونوںماں بیٹی کو بازیاب کروالیا تاہم مرکزی ملزم اور اس کا باپ فرار ہوگئے جن کی گرفتار کیلئے پولیس چھاپے ماررہی ہے۔

روزنامہ خبریں کے مطابق محنت کش محمد رمضان محنت مزدوری کیلئے گھر سے باہر تھا اس دوران اس کی بیوی بھی کسی کام کے سلسلہ میں گھر سے باہر گئی ہوئی تھی کہ آبادی کے بااثر شخص چوہدری محمد افضل گجر کے بیٹے ملزم عبدالرحمان نے طالبہ (ل) کو گھر میں اکیلی پاکر اس کے گھر میں داخل ہوکر زبردستی زیادتی کر ڈالی اور اسے زخمی حالت میں چھوڑ کر فرار ہوگیا۔ جب طالبہ کی والدہ گھر آئی تو اس نے بیٹی کو اس حال میں دیکھ کر شور و غل شروع کیا اور فوری طور پر مقامی ہسپتال میں علاج معالجہ کیلئے لے کر گئی، اس واقعہ کی اطلاع جب ملزم کے والد چوہدری افضل گجر کو ہوئی تو وہ بھی اپنے ساتھیوں کے ہمراہ مذکورہ ہسپتال پہنچ گیا جہاں ماں بیٹی کو ہسپتال کے کمرہ میں بند کرکے انہیں ہراساں کرنا شروع کردیا کہ ۔

اس واقعہ کی پولیس کو رپورٹ نہیں دینی تاہم کسی نے پولیس کو تمام صورتحال سے آگاہ کیا تو ایس ایچ او بی ڈویژن مذکورہ ہسپتال پہنچ گیا جسے دیکھتے ہی بااثر شخص وہاں سے رفو چکر ہوگیا اور پولیس نے ماں بیٹی کو بند کمرے سے بازیاب کرواکر ڈی ایچ کیو ہسپتال منتقل کیا جہاں طالبہ کا میڈیکولیگل جاری کروانے کے بعد پولیس نے ملزمان کی گرفتاری کیلئے مختلف مقامات پر چھاپے مارنا شروع کردئیے ہیں۔

طالبہ کے والد محمد رمضان نے بتایا کہ وہ ایک غریب شخص ہے اور ملزم علاقہ کے بااثر افراد ہیں اسے فوری انصاف چاہیئے جبکہ ڈی پی او نے بھی اس واقعہ کا نوٹس لے لیا ہے تاہم رات گئے طالبہ سے زیادتی کے واقعہ کا مقدمہ درج نہیں ہوسکا۔

مزید : علاقائی /پنجاب /شیخوپورہ


loading...