مڈل مین کے کردار کو کم کرنے کی ضرورت، اشیائے خوردونوش کی قیمتوں میں مصنوعی اضافے کے ہم سب ذمہ دار ہیں:اکرم چوہدری 

مڈل مین کے کردار کو کم کرنے کی ضرورت، اشیائے خوردونوش کی قیمتوں میں مصنوعی ...
 مڈل مین کے کردار کو کم کرنے کی ضرورت، اشیائے خوردونوش کی قیمتوں میں مصنوعی اضافے کے ہم سب ذمہ دار ہیں:اکرم چوہدری 

  



لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن) مشیر وزیرِ اعلیٰ پنجاب محمد اکرم چوہدری نے کہا ہے کہ سبزیوں، پھلوں اور دیگر اشیائے خوردونوش کی قیمتیں اس وقت ریکارڈ حد تک کم ہیں،کاشتکاروں اور صارفین کو فائدہ پہنچانے کے لیے ہمیں مڈل مین کے کردار کو کم کرنے کی ضرورت ہے،ہمیں ان عناصر کو بے نقاب کرنا ہے جو گراں فروشی میں ملوث ہیں اور قیمتوں پر منفی طریقے سے اثر انداز ہوتے ہیں،قیمتوں میں مصنوعی اضافے کے ہم سب ذمہ دار ہیں ،وقت آگیا ہے کہ ہم اپنی منڈیوں کو جدید بنانے کے لیے عملی اقدامات کریں۔

بادامی باغ سبزی منڈی کے دورے کے موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے محمد اکرم چوہدری نے سبزی منڈی میں صفائی کی صورتحال، پھلوں اور سبزیوں کی بولی کے طریقہ کار اور قیمتوں کے تعین کے نظام کا معائنہ کیا۔ اس موقع پر پرائس کنٹرول مجسٹریٹ ظفر زیدی، سیکرٹری مارکیٹ کمیٹی فاطمہ بتول، ڈپٹی ڈائریکٹر ایگریکلچر بھی موجود تھے۔ انہوں نے آڑھتیوں، پھڑیاں فروش اور مزدور یونین کے عہدیداران سے بھی ملاقات کی۔ محمد اکرم چوہدری نے کہا کہ ہم کاشتکار اور صارفین کے حقوق کا تحفظ چاہتے ہیں، بولی کے عمل سے لیکر صارف تک پہنچنے تک پھلوں اور سبزیوں کی قیمت کا تعین سمجھنے یہاں آیا ہوں،ہمارا مقصد ان عناصر کو پکڑنا ہے جو قیمتوں میں اضافے کا سبب بنتے ہیں،جدید منڈیاں وقت کا تقاضا ہیں اور ضرورت اس امر کی ہے کہ پاکستان میں منڈیوں کو جدید بنایا جا?۔منڈیوں کو شہروں سے باہر منتقل کرنے سے متعلق ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ سبزی منڈیوں کو لکھو ڈیر منتقل کرنے کا فیصلہ تمام سٹیک ہولڈرز کو اعتماد میں لیکر کیا جائے گا ،ماضی میں بھی ملتان روڈ سبزی منڈی کو شہر سے دور منتقل کرنے کا فیصلہ کیا گیا تھا جو متعلقین کے لیے سود مند نہ ہونے کی بنا پر کینسل کر دیا گیا تھا۔مارکیٹ میں ٹماٹر کی کمی اور قیمت میں اضافے سے متعلق ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ملک میں ٹماٹر وافر مقدار میں موجود ہے، پچھلے کچھ دنوں سے موسم کی سختی کی وجہ سے مارکیٹ میں ٹماٹر کی رسد میں کمی آئی ہے جس کا ناجائز فائدہ اٹھاتے ہوئے کچھ عناصر نے ٹماٹر مہنگے داموں فروخت کرنا شروع کر دیئے۔ انہوں نے اس بارے میں مزید کہا کہ تا حال انڈیا سے ٹماٹر درآمد نہیں کیا گیا اور نہ ہی کوئی ارادہ ہے، پھلوں اور سبزیوں کی قیمتوں میں اضافے کی ذمہ داری کسی ایک عنصر پر نہیں ڈالی جا سکتی، قیمتوں میں مصنوعی اضافے کے ہم سب ذمہ دار ہیں، اور مل جل کر ہی اس کا خاتمہ کیا جا سکتا ہے۔ انہوں نے پھڑیا یونین کے عہدیداران سے بھی ملاقات کی اور قیمتوں میں ناجائز اضافے کی روک تھام کے لیے انکی سفارشات کو سراہا اور ہر ممکن تعاون کی یقین دہانی کرائی

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور


loading...