بھارت کا ہر 10میں سے ایک شہری کینسر میں مبتلا، سالانہ 8لاکھ اموات

  بھارت کا ہر 10میں سے ایک شہری کینسر میں مبتلا، سالانہ 8لاکھ اموات

  

نئی دہلی(شِنہوا)کینسر کے عالمی دن پر عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او)کی جانب سے جاری کی گئی ایک نئی رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ بھارت میں ہر 10 میں سے کم از کم ایک شخص کو اپنی زندگی میں کینسر کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے۔رپورٹ میں کہا گیاہے کہ بھارت میں کینسر کا مرض بڑھ رہا ہے اور ہر 15 میں سے ایک شخص اس بیماری کی وجہ سے موت کے منہ میں چلا جاتا ہے۔ایک اندازے کے مطابق بھارت میں ہرسال تقریبا 11لاکھ 60ہزار کینسر کے نئے مریضوں کی شناخت ہوتی ہے، اور ہرسال اس بیماری کی وجہ سے7 لاکھ 84 ہزار 8 سو اموات ہوتی ہیں۔کینسر کے ان مریضوں میں سے مردوں کی تعداد 5 لاکھ 70 ہزارہے جن میں سے زیادہ تعداد منہ کے کینسر میں مبتلا مریضوں کی ہے اس کے بعد پھیپھڑوں کے کینسر، معدے کے کینسر، آنتوں کے کینسر اور غذائی نالی کے کینسر میں مبتلا مریضوں کی تعداد ایک اندازے کے مطابق 45 فیصد پر مشتمل ہیں۔کینسر میں مبتلا مریضوں میں خواتین کی تعداد 5 لاکھ 87 ہزارہے جن میں زیا دہ تعداد چھاتی کے کینسر میں مبتلا ہیں جبکہ سرویکل کینسر، بچہ دانی کے کینسر، منہ کے کینسر اور آنتوں کے کینسر کے مریضوں کی تعداد 60 فیصد پر مشتمل ہے۔ڈبلیو ایچ او کی رپورٹ میں یہ بھی انکشاف کیا گیا ہے بھارت میں سب سے زیادہ کینسر کی اقسام میں چھاتی،منہ، رحم، پھیپھڑ و ں،معدے اور آنتوں کے کینسر عام ہیں۔ہر سال چھاتی کے کینسرکے 1لاکھ 62 ہزار 5 سو نئے کیسز سامنے آتے ہیں جبکہ آنتوں کے کینسرکے 57 ہزار نئے کیسز رپورٹ ہوتے ہے۔ کینسر کے تمام نئے مریضوں میں 49 فیصد کا تعلق کینسر کی چھ بڑی اقسام سے ہوتا ہے۔اس سال کینسر کے عالمی دن کا موضوع ”میں کرسکتا ہوں“ ”ہم کرسکتے ہیں“ہے۔ اس عنوان کا مقصد اس خیال کو فروغ دینا ہے کہ ہر شخص میں یہ قوت موجود ہے کہ وہ کینسر کا بوجھ اٹھا سکے اور مل کر سب کام کرتے ہو ئے کینسر کے خطرات کو کم کرسکتے ہیں۔

بھارت کینسر

مزید :

صفحہ آخر -