چینی کا مصنوعی بحران‘ گوداموں میں لاکھوں بوریاں سٹاک کرنیکا انکشاف

  چینی کا مصنوعی بحران‘ گوداموں میں لاکھوں بوریاں سٹاک کرنیکا انکشاف

  

شجاع آباد (نمائندہ خصوصی)حکومت کی ناقص حکمت عملی گندم کے باعث مصنوعی بحران کے خاتمے کے بعد اب چینی کا مصنوعی بحران شدت اختیار کر گیاشوگر ملز مافیا اورتاجروں نے خفیہ گوداموں میں لاکھوں بوریاں چینی سٹاک کر لیں چینی کی شارٹیج کی وجہ سے چینی کا ریٹ 80روپے فی کلو سے تجاوز کر گیا شوگرملزمافیا کے آگے حکومت نے گھٹنے ٹیک دئیے ہیں (بقیہ نمبر3صفحہ12پر)

قابل غور بات یہ ہے کہ شوگر ملز مافیا نے کسانوں کا استحصال کر کے گنے کو اونے پونے داموں خرید کر کے چینی کو سٹاک کر لیا اور ساتھ ہی تاجر طبقہ نے سستے داموں چینی خرید کر کے سٹاک کر لی ہے جس کی وجہ سے چینی کا شارٹیج شروع ہو گئی چینی کے سٹاک کو چیک کرنے میں حکومت اور انتظامیہ مکمل طور پر بے بس نظر آ رہی ہے اب بھی کماد کی فصل کھیتوں میں رل رہی ہے گنے کے نرخ نہ ہونے سے کسانوں نے گنا کو جانوروں کو کھلانا شروع کر دیا ہے حالانکہ چینی وافر مقدار میں موجود ہے حکومت شوگر ملز مالکان اور تاجروں کی طرف سے سٹاک کر چینی کو اپنی تحویل لے تو چینی کا مصنوعی بحران ختم ہو سکتا ہے

سٹاک

مزید :

ملتان صفحہ آخر -