مودی سرکاری کشمیریوں کے جذبہ کو شکست نہیں د ے سکتی،ذکر اللہ مجاہد

مودی سرکاری کشمیریوں کے جذبہ کو شکست نہیں د ے سکتی،ذکر اللہ مجاہد

  

لاہور(پ ر)امیر جماعت اسلامی لاہور ڈاکٹر ذکر اللہ مجاہد نے کہا ہے کہ مودی سرکار اپنی تمام تر درندگی کے باوجود کشمیری عوام کے عزم آزادی کو شکست نہیں دے سکی۔ بھارتی فوج 185 دنوں کے کرفیوں سے بھی کشمیری مسلمانوں کی طویل جدوجہد آزادی کو کچلنے میں مکمل ناکام ہوچکی ہے۔مودی سرکاری نے انتہا پسندانہ ا قدم اُٹھا کر دراصل پوری دُنیاپر اپنے سیکولرازم کا سیاہ چہرہ عیاں کردیا ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے جماعت اسلامی لاہور کے زیر اہتمام مال روڈ پر کشمیر مارچ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ کشمیر مارچ میں سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی پاکستان امیرالعظیم، مرکزی رہنما جماعت اسلامی پاکستان حافظ محمد ادریس، معروف مذہبی سکالر علامہ ابتسام الہی ظہیر ٰ،سیکرٹری اطلاعات جماعت اسلامی پاکستان قیصر شریف، سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی لاہور انجینئر اخلاق احمد و دیگر نے شرکت کی،

نائب امراء جماعت اسلامی لاہور ملک شاہد اسلم، ضیاء الدین انصاری، اظہر بلال، افتخار احمد چوہدری، انچارچ پروگرام کشمیر مارچ چوہدری محمود الاحد، صدر جے آئی یوتھ لاہور صہیب شریف و دیگر نے شرکت کی۔

، ڈپٹی سیکرٹریز جماعت اسلامی لاہور عبدالعزیز عابد، مرزا عبدالرشید، عمر شہاز، امراء علاقہ جماعت اسلامی لاہور چوہدری محمد شوکت، ڈاکٹر محمود احمد، حاجی الریاض الحسن، خالد احمد بٹ، ملک شفیق احمد، سیکرٹری اطلاعات جماعت اسلامی پنجاب محمد فاروق چوہان،سیکرٹری اطلاعات جماعت اسلامی لاہور اے ڈی کاشف سمیت بڑی تعداد میں مردو خواتین اور بچوں نے شرکت کی۔ ڈاکٹر ذکر اللہ مجاہد نے خطاب کرتے ہوئے مزیدکہا کہ بھارتی درندوں کے ہاتھوں جب بھی کوئی کشمیری نوجوان شہید ہوتا ہے تو کشمیریوں کا جذبہ حریت اور بھارتیوں سے نفرت اور پاکستان سے محبت کا اظہار پوری دنیا کے بے مثال ہوتا ہے۔ شہید کے جنازے میں جہاں ہزاروں کی تعداد میں افراد پاکستان کے حق میں نعرے بلند کر تے ہوئے شریک ہوتے ہیں وہاں شہید کے تابوت کو پاکستانی پرچم میں لپیٹ کر لحد میں اتارا جاتا ہے مگر آج 185 دنوں سے کشمیری مسلمان بھارتی ظلم و بربریت کی چکی میں بھوکے پیاسے انسانی بنیادی ضرورت سے محروم زندگی گزارنے پر مجبور ہیں۔ حکمران سمیت عالمی برداری مذمتی بیانات اور نعروں کے سوا کشمیریوں کی عملی مدد کیلئے کچھ نہیں کررہی ہے جو شرمناک اور قابل مذمت ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -