رشکئی انٹر چینج کے ڈکیتی کی واردات، ملزمان ایک کروڑ 10لاکھ لوٹ کر فرار 

رشکئی انٹر چینج کے ڈکیتی کی واردات، ملزمان ایک کروڑ 10لاکھ لوٹ کر فرار 

  

پبی (نما ئندہ پاکستان) تھانہ رسالپور کے حدود میں رشکئی موٹروے انٹر چینج کے قریب کرڑوں روپے کی ڈکیتی۔ ایکسائز پولیس کے جعلی وردی میں ملبوس نامعلو م ملزمان کی ڈکیتی کی وردات نجی فیکٹر ی کے عملے کو باندھ کر ایک کرڑو دس لاکھ روپے لوٹ کرکمپنی کیشر اور ڈرائیور کو گاڑی سمیت اغواء کر لیا ڈاکووں پشاور کی طرف فرارتفصیلات کے مطابق نہارعلی ولد حمداعلی سکنہ علی کلے رستم مردان نے تھانہ رسالپور میں رپورٹ درج کراتے ہو ئے پولیس کو بتا یا کہ  میں خیبر ٹوبیکو کمپنی مردان میں بطور ڈرائیور ملازم ہوں گزشتہ شب میں اور ریاض محمد ولد گل مولا خان سکنہ ہاتھیان تخت بھائی مردان ڈرائیور رشید اور اعجاز کے ساتھ آلٹس موٹر کار نمبر710/AHAمیں سرگوھاد بازارسے خیبر ٹوبیکو کمپنی کے ڈسٹری بیوٹر سے 60لاکھروپے لے کرچکوال کے لیے روانہ ہوئے تین بجے  چکوال پہنچ کراعجاز شاہ نے چکوال میں موجود ڈسٹری بیوٹر ہمایون سے 50لاکھ روپے لے کرمردان کے لیے براستہ موٹروے ہوئے جب ہماری گاڑی رشکئی انٹر چینج پہنچے توموٹر کار نمبر888/XLIبرنگ بلیو آگے کھڑی ہوئی ویگو گاڑی نمبر نامعلوم برنگ سفیدویڈو نمبر نامعلوم برنگ سلور میری گاڑی کے پیچھے کھڑی ہوئیXLIموٹرکار چار افراداورویگو گاڑی سے بھی چار آدمی جو ایکسائز کے وردی میں ملبوس تھے اترے اور مجھے زبردستی گاڑی سے نیچے اتر کراپنے ساتھ گاڑی میں بیٹھاکر ہتھکڑی لگا دیا اور میری گاڑی سمیت تمام گاڑیاں پشاور کی طرف روانہ ہوئیں اور مجھ  سے ایک کرڑو دس لاکھ روپے چھین کرہتھکڑیوں سمیت رنگ روڈ پشاور پر اتار دیااور فرار ہو گئے رسالپور پولیس نے مقدمہ درج کر کے تفتش شروع کر دی  ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر نوشہرہ نجم الحسنین کے مطابق مذکورہ ڈکیتی میں آٹھ افراد کا گرو ملوث ہے جبکہ ڈاکووں نے بڑے منظم طریقے سے وردات کی ہے ڈاکووں نے کمپنی ڈرائیور اور کیشئر کو بھی اغواء  کیا ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -