نیو ملتان: پولیس حراست میں ڈکیتی کا ملزم ہلاک، محرر، سنتری معطل 

نیو ملتان: پولیس حراست میں ڈکیتی کا ملزم ہلاک، محرر، سنتری معطل 

  

 ملتان(وقائع نگار)  نیو ملتان کی حراست میں ڈکیتی کا ملزم کی پراسرار طور پر ہلاک ہوگیامقامی پولیس نے ملزم کی وجہ موت کو خودکشی قرار دے دیا ہے۔پوسٹ مارٹم کے بعد لاش ورثا کے حوالے۔تدفین کا عمل مکمل۔جبکہ سوشل میڈیا پر مذکورہ نوجوان کی موت تشدد کے ذریعے ہونے بارے ایک نئی بحث چھیڑ گئی۔دوسری جانب اعلی پولیس افسران نے نوٹس لے لیا۔محرر و سنتری معطل اور ایس ایچ او کی انکوائری(بقیہ نمبر10صفحہ6پر)

 شروع ہوگئی ہے۔معلوم ہوا ہے پولیس تھانہ نیو ملتان نے ڈکیتی کی واردات میں ملوث ہونے پر کڑی جمنداں خونی برج کے رہائشی ملزم حمزہ کو گرفتار کیا۔۔جس کا مقدمہ نمبر 74/21 بجرم 392 تھا نہ نیو ملتان کی حالات میں جسمانی ریمانڈ حاصل کیا۔ایک روز رات کے کسی پہر مذکورہ گرفتار ملزم حمزہ نے اپنے اوڑھنے والی چادر کو پھاڑ کر گلے میں پھندا ڈال کر خودکشی کرلی۔پولیس ذرائع کے مطابق اس وقت تھانہ نیو ملتان نے حوالات میں کوئی اور ملزم قید نہ تھا۔ملزم نے اکیلے ہونے کا فایدہ اٹھاتے ہوئے خودکشی کی۔اطللاع ملنے پر پولیس کے اعلی افسر موقع پر آگئے۔جہنوں نے جائے وقوعہ کا جائزہ لیا۔پھندے سے لٹکی حمزہ کی لاش کو نیچے زمین پر اتارا گیا۔مقامی پولیس نے لاش کو قبضے میں لیکر فوری طور پر نشتر ہسپتال پوسٹ مارٹم کیلئے منتقل کروایا۔جہاں اسکا پوسٹ مارٹم ہوا۔جبکہ دوسری جانب پولیس نے مذکورہ نوجوان کی وجہ موت کو خودکشی قرار دیا ہے۔ذرائع کے مطابق حمزہ ڈکیتی کے چھ مقدمات میں مطلوب تھا۔جس میں سے چار دہلی گیٹ۔اور دو نیو ملتان کے مقدمات شامل تھے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ حمزہ جعلی پسٹل کی ذریعے عموما وارداتیں کرتا تھا۔نشہ کا استعمال کرنا بھی معمول تھا۔اس بارے میں جب ایس ایس پی آپریشنز ذیشان حیدر سے پوچھ گیا تو انہوں نے بتایا کہ تھانہ نیو ملتان کے محرر اور سنتری کو معطل کردیا۔ایس پی گل گشت ڈاکٹر رضا تنویر کا کہنا ہے کہ مذکورہ واقعہ کی انکوائری شروع ہے۔ذمے دار کے کردار کے تعین کرکے قرار واقعی سزا دی جائے گی۔حمزہ کے ورثا نے حمزہ کی لاش وصول کرکے تدفین کردی ہے۔واضح رہے سوشل میڈیا پر حمزہ کی موت خودکشی کی بجائے تشدد کا معاملہ بتایا جارہا ہے۔اور مختلف قسم کی بحث کر رہے ہیں۔

ہلاک

مزید :

ملتان صفحہ آخر -