ویکسین ایجاد لیکن کورونا کو دنیا سے ختم ہونے میں کتنا وقت لگ سکتا ہے؟ سائنسدانوں نے عندیہ دیدیا

ویکسین ایجاد لیکن کورونا کو دنیا سے ختم ہونے میں کتنا وقت لگ سکتا ہے؟ ...
ویکسین ایجاد لیکن کورونا کو دنیا سے ختم ہونے میں کتنا وقت لگ سکتا ہے؟ سائنسدانوں نے عندیہ دیدیا

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) دنیا کو کورونا وائرس کی ویکسین کا انتظار تھا کہ ویکسین آئے اور اس موذی وباءسے دنیا کو نجات ملے۔ اب ویکسین بھی آ چکی ہے مگر اس کے مکمل خاتمے کے متعلق سائنسدانوں کی طرف سے پریشان کن انکشاف بھی سامنے آ گیا ہے۔ میل آن لائن کے مطابق سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ ویکسین آنے کے بعد بھی یہ وباءجلد ختم ہونے والی نہیں ہے۔ کورونا وائرس کے مکمل ختم ہونے میں لگ بھگ 7سال کا عرصہ لگے گا۔ جب تک تیار ہونے والی ویکسین دنیا کی 75فیصد آبادی کی دسترس میں نہیں پہنچتی، تب تک اس وباءکا خاتمہ نہیں ہو گا۔

رپورٹ کے مطابق سائنسدانوں نے ایک ویکسین کیلکولیٹر تیار کیا ہے جس کے ذریعے معلوم ہوا ہے کہ دنیا کی 75فیصد آبادی تک ویکسین پہنچنے میں 7سال کا عرصہ لگے گا۔ تب کہیں پوری دنیا میں ’ہرڈ امیونٹی‘ (Herd immunity)آئے گی اور اس وائرس کا پھیلاﺅ رک جائے گا۔اس کیلکو لیٹر کے ذریعے امریکہ کے متعلق معلوم ہوا ہے کہ امریکہ میں 2022ءتک ویکسین 75فیصد آبادی کی دسترس میں ہو گئی اور 2022ءکے نیوایئر تک امریکہ کو ’ہرڈ امیونٹی‘ حاصل ہو جائے گی۔ واضح رہے کہ اب تک ویکسین کی 11کروڑ 90لاکھ خوراکیں پوری دنیا کو دی گئی ہیں۔ امریکہ میں اب تک صرف 8.7فیصد آبادی کو ایک یا دو بار ویکسین دی گئی ہے۔ 

مزید :

کورونا وائرس -