ترکی میں ہونیوالے کلنری مقابلوں میں پاکستانی شیفس بھی حصہ لیں گے

ترکی میں ہونیوالے کلنری مقابلوں میں پاکستانی شیفس بھی حصہ لیں گے

  

لاہور (بزنس رپورٹر) ورلڈ ایسوسی ایشن آف شیفز سوسائٹیز (WACS)کی شیفز ایسوسی ایشن آف پاکستان (CAP)نے کالج آف ٹورازم اینڈ ہوٹل مینجمنٹ کے اشتراک سے کوتھم کالج میں نیشنل کلنری ٹیم کی تعارفی تقریب کا انعقاد کیا جس کے مہمان خصوصی صوبائی وزیر تعلیم،کھیل اور امورِ نوجوانان رانا مشہود احمد خان تھے جبکہ ان کے ساتھ ممتاز صحافی،دانشور اور روزنامہ ’’پاکستان‘‘ کے چیف ایڈیٹر مجیب الرحمن شامی،کوتھم کالج کے چیف ایگزیکٹو آفیسر احمد شفیق،مسعود علی خان،شیف وقار الیاس خان، زبیر خان، ایم پی اے میڈم عظمیٰ بخاری، پارلیمانی سیکرٹری برائے ایکسائز میاں محمد منیر دیگر سینئر صحافی اورہوٹل انڈسٹری کے سینئر نمائندے بھی موجود تھے۔اس موقع پر کوتھم کالج کے چیف ایگزیکٹو اور شیفس ایسوسی ایشن آف پاکستان کے جنرل سیکرٹری احمد شفیق نے کہا کہ میری اور میرے ساتھیوں کی بڑی دیر سے یہ تمنا تھی کہ کلنری کے بین الاقوامی مقابلوں میں پاکستانی ٹیم بھی حصہ لے اور بین الاقوامی سطح پر پاکستان کی نمائندگی کرتے ہوئے پاکستان کوزین کو متعارف کروائے آج اللہ کا شکر ہے کہ ہمارا یہ خواب پورا ہو رہا ہے اور 11شیف پر مشتمل یہ ٹیم 4فروری سے 11فروری تک ترکی میں منعقد ہونے والے بین الاقوامی کلنری مقابلے میں پاکستان کی نمائندگی کرے گی اوردنیا بھرکے سامنے ہمارا سوفٹ امیج پیش کرے گی۔انہوں نے اس عزم کا اظہار کیا کہ اگر حکومت تعاون کرے تو ہم2016ء میں قومی سطح پر اور 2017ء میں بین الاقوامی کلنری مقابلوں کا انعقاد لاہور میں کریں گے تاکہ دنیا کو بتایا جاسکے کہ پاکستانی بہترین لوگ اور پاکستان بہترین ملک ہے۔اس موقع پر سینئر صحافی اور دانشور مجیب الرحمن شامی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اب پاکستانی دیگر شعبوں کی طرح کھانا پکانے کے فن میں بھی دنیا کو اپنی صلاحیتوں کے اظہار سے حیران کر دیں گے۔انہوں نے کہا کہ بے شک کھانا بنانا ایک فن ہے کیونکہ اس کے لوازمات تو ہر جگہ ایک جیسے ہی ہوتے ہیں یہ صرف اس کو بنانے والے کے فن اور مہارت پر منحصر ہے کہ وہ اس میں کیسا ذائقہ اور غذائیت پیدا کرتا ہے۔ مجیب الرحمن شامی نے کہا کھانے پینے کے کاروبار کی ترقی معیشت کی ترقی کا اعشاریہ ہوتی ہے، کیونکہ جب لوگ بہتر کما رہے ہوتے ہیں تو ہی وہ ہوٹل اور ریسٹورنٹس کی جانب جاتے ہیں۔ تقریب کے مہمانِ خصوصی صوبائی وزیر تعلیم، کھیل، سیاحت اور امورِ نوجواناں رانا مشہود نے اس موقع پر کہا کہ اب تمام پاکستانیوں کو اپنی صلاحیتوں کے اظہار کے یکساں اور وافر مواقع دستیاب ہوں گے۔ پاکستانی ایک باصلاحیت قوم ہیں انہیں صرف مواقوں کی ضرورت ہوتی ہے آپ کی حکومت اب نوجوانوں کو ہر شعبے میں مواقع فراہم کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاک چائنہ راہداری صرف سڑک کا منصوبہ نہیں ہے، بلکہ اس منصوبے سے ہر سطح پر تکنیکی افراد کے لئے لاکھوں کی تعداد میں روزگار کے مواقع ملیں گے۔ انہوں نے کہا کہ آپ کی حکومت بجلی کے منصوبوں کی بروقت تکمیل کے لئے دن رات کوشاں ہے اور انشاء اللہ2018ء میں ملک سے لوڈشیڈنگ کا خاتمہ ہو جائے گا اور اس سے ملکی جی ڈی پی کم از کم2فیصد تک بڑھ جائے گی، جس سے روزگار کے مزید مواقع پیدا ہوں گے۔ انہوں نے اس عزم کا اظہار کیا کہ کوتھم کالج اور شیفس ایسوسی ایشن کی کوششوں سے تشکیل کردہ یہ نیشنل کلنری ٹیم بین الاقوامی سطح پر پاکستان کا نام روشن کرے گی اور دُنیا بھر میں پاکستان کے بہترین اور مزیدار کھانوں کو متعارف کروانے کا ذریعہ بنے گی۔انہوں نے کہا کہ فنی تعلیم اور ٹریننگ پروگرام کے ذریعے پاکستان کی افرادی قوت کی استعدادِ کار کو بڑھانے کے حوالے سے کوتھم کالج اور احمد شفیق کا کردار واقعی قابلِ تعریف ہے اور حکومتِ پنجاب ہر ایسی کاوش کو قدر کی نگاہ سے دیکھتی ہے اور اس والے سے ہر ممکن مدد بھی فراہم کی جائے گی ۔ تقریب سے نیشنل کلنری ٹیم کے کوچ شیف وقار الیاس خان نے بھی خطاب کیا، جبکہ تقریب کی کمپیئرنگ بابر شیخ نے کی۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -