ایمنسٹی سکیم سے ریونیو میں اضافہ اور تاجروں اور حکومت میں اعتماد سازی کو فروغ ملے گا: صنعتکار، تاجر رہنماء

ایمنسٹی سکیم سے ریونیو میں اضافہ اور تاجروں اور حکومت میں اعتماد سازی کو ...

  

لاہور(اسد اقبال)صنعتکاروں و تاجروں نے وفاقی حکو مت کی طرف سے رضاکارانہ ٹیکس ادائیگی ایمنسٹی سکیم کے اجراء کوخوش آئند قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ رضا کارانہ ٹیکس ادائیگی سکیم کے تحت تاجروں اور حکومت کے درمیان اعتماد سازی کو فروغ حاصل ہوگاجس کے باعث نہ صرف حکومت کے ریونیو میں اضافہ ہوگا بلکہ کاروباری سرگرمیوں میں بھی بہتری آئے گی جبکہ اس سے معیشت پر بھی مثبت اثرات مر تب ہو نگے ۔پاکستان سے گفتگو کر تے ہوئے پیاف کے چیئر مین عرفان اقبال شیخ ، انجمن تاجران پاکستان کے جنرل سیکرٹری نعیم میر ، لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے نائب صدر ناصر سعید ،ایگزیکٹو ممبر عدنان بٹ ،پنجاب سر مایہ کاری بورڈ اینڈ ٹر یڈ کے چیئر مین عبدالباسط ،پاکستان پبلشرز ایسو سی ایشن کے مرکزی رہنماء ابو ذر غفاری ، پاکستان فلور ملز ایسو سی ایشن کے رہنماء عاصم رضا ،لاہور ٹر یڈرز الائنس کے صدر صفدر بٹ اور پاکستان گڈز ٹرانسپورٹ کے جنر سیکرٹری نبیل محمو د نے کہا کہ حکو مت کی جانب سے ایمنسٹی سکیم ایک اچھا اقدام ہے جس سے ملک میں ٹیکس کی بنیاد کو وسعت ملے گی اور ٹیکس ریونیو میں اضافہ ہوگا ۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں موجودہ ٹیکس نظام کافی پیچیدہ ہے جس وجہ سے بہت سے لوگ ٹیکس کے دائرے میں آنے سے کتراتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ بینکوں کے لین دین پر 0.6فیصد ود ہولڈنگ ٹیکس کے نفاذ کے فیصلے سے تاجر برادری اور حکومت کے درمیان کافی کشیدگی پیدا ہوگئی تھی کیونکہ تاجر اس ٹیکس کے نفاذ سے خوش نہیں تھے ۔انہوں نے کہا کہ چند دوسرے ممالک نے بھی ایسی سکیموں کا اجراء کرکے ٹیکس ریونیو کو بہتر کیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ موجودہ حالات میں جبکہ ملک میں ٹیکس ٹو جی ڈی پی کی شرح مطلوبہ معیار سے کافی کم ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ سکیم اس لحاظ سے بھی اچھی ہے کیونکہ یہ منی لانڈرنگ اور حوالہ کے ذریعے پیسے بھیجنے کے رحجانات کی بھی حوصلہ شکنی کرے گی ۔انہوں نے کہا کہ اس میں کوئی شک نہیں کہ نان فائلرز کے لیے ایمنسٹی سکیم آخری قدم تھا لیکن پالیسی میکرز نے یہ فیصلہ بہت سوچ سمجھ کر کیا ہوگا۔صنعتکاروں اور تاجروں نے حکو مت سے اپیل کی ہے کہ ایف بی آر کے ٹیکس نظام ادائیگی کے طریقہ کار کو آسان بنائے تاکہ ایک عام کاروباری فرد بھی ٹیکس ادا کرنے کو وبال جان نا سمجھے بلکہ با آسانی ٹیکس ادا کر کے ملک و قوم کی تعمیر و ترقی میں اپنا کردار ادا کر سکے اور ملک تر قی و خوشحالی کی راہ پر گامزن ہو سکے۔

مزید :

صفحہ آخر -