پٹھانکوٹ حملہ ؛ نواز شریف کا مودی کو فون ، تحقیقات میں تعاون کی یقین دہانی

پٹھانکوٹ حملہ ؛ نواز شریف کا مودی کو فون ، تحقیقات میں تعاون کی یقین دہانی

  

 نئی دہلی/کولمبو (آن لائن 228اے این این، مانیٹرنگ ڈیسک) وزیراعظم نواز شریف نے بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کو پٹھان کوٹ واقعے کی تحقیقات میں مکمل تعاون کی یقین دہانی کرا دی ہے۔ تفصیلات کے مطابق وزیراعظم نواز شریف نے بھارتی ہم منصب نریندر مودی سے ٹیلیفونک رابطہ کیا اور پٹھان کوٹ واقعے کی تحقیقات میں تعاون کی یقین دہانی کرائی۔بھارتی میڈیا کے مطابق نواز شریف نے پٹھان کوٹ حملے پر نریندر مودی اور عوام سے دلی تعزیت کا اظہار بھی کیا۔دریں اثناء نجی ٹی وی سے خصوصی گفتگو میں وزیراعظم نوازشریف نے کہا کہ پٹھان کوٹ حملے پر مودی کی جانب سے فراہم کی گئی تفصیلات پر تحقیقات کا آغاز کر دیا گیا،وزیراعظم نوازشریف نے کہاہے کہ پٹھان کوٹ پرحملے کامقصد پاک بھارت امن عمل کو سبوتاڑ کرناتھا،مودی کویقین دلایاکہ آپ کی جانب سے دی گئی معلومات کی بنیادپرتحقیقات کرینگے۔نوازشریف کا کہناتھا کہ نریندرمودی سے اچھی بات چیت ہوئی،مودی نے دہشت گردوں کی ٹیلی فون گفتگو کی تفصیلات بھی شیئرکی ہیں جس پر مودی کو کہا ہے کہ آپ کو مطمئن کرنے کی بھرپورکوشش کریں گے۔

نئی دہلی(اے این این،مانیٹرنگ ڈیسک)پٹھان کوٹ حملے کی کہانی میں نیا موڑ آگیا ہے۔بھارتی میڈیا کے مطابق بھارتی خفیہ ایجنسیوں نے ایس پی گورداس پور سلو ویندر کو گرفتار کر لیا ۔حکام کے مطابق وہ حملہ آوروں سے ملے ہوئے تھے انہوں نے ان کو فوجی گاڑی اور وردیاں فراہم کیں۔دوسری جانب بھارتی میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے قومی تحقیقاتی ادارے کے سربراہ شرد کمار نے کہا ہے کہ پٹھان کوٹ حملے میں ملوث دہشت گردوں کے خلاف3مقدمات درج کر کے واقعہ کی تحقیقات کے لئے20رکنی ٹیم تشکیل دے دی گئی۔جس کی قیادت انسپکٹر جنرل کے عہدے کا آفیسرکر رہا ہے جب کہ ایس پی لیول کے ایک آفیسر کو چیف انوسٹی گیشن آفیسر مقرر کیا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پٹھان کوٹ ایئر بیس پر حملے میں ملوث دہشتگردوں کے ٹیلی فون کالز کا ریکارڈیہ ثابت کرتا ہے کہ ان کا تعلق پاکستان سے تھا۔ دریں اثناء بھارتی وزیردفاع منوہرپاریکر نے کہاہے کہ ملکی سیکیورٹی پرکوئی سمجھوتا نہیں کیاگیااور اثاثوں کو بھی نقصان نہیں پہنچا،امید ہے پٹھان کوٹ آپریشن آج ختم ہوجائے گا،دہشتگرد کہاں سے آئے اور انہیں کس نے بھیجا،تحقیقات پوری ہونے پربتائیں گے۔پٹھان کوٹ ایئر بیس پر میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے بھارتی وزیر دفاع نے دہشتگردحملوں اورآپریشن میں ہلاک ہونے والوں کیلئے معاوضے کااعلان کیا اور اپنی فوج کو کامیاب آپریشن پر مبارکباددی۔ انہوں نے کہا کہ حفاظتی اقدامات کے پیش نظرپٹھان کوٹ میں آپریشن جاری ہے، آپریشن مکمل ہونے کے بعد میڈیاکومکمل معلومات فراہم کریں گے،دہشتگردوں کی شناخت ڈی این اے ٹیسٹ کے بعد بتائی جائے گی،پٹھان کوٹ ایئربیس آپریشن میں 6 دہشتگرد مارے گئے،ایک ہزار 900ایکڑ کے علاقے میں آپریشن کرنا آسان نہیں تھا، فورسز نے اچھا آپریشن کیا لیکن دہشتگردوں کے داخلے پر بھی تحقیقات کی جائیں گی۔انہوں نے بتایا کہ پٹھان کوٹ ایئربیس پرموجود اثاثوں کو نقصان نہیں پہنچا،میڈیاکو سیکیورٹی سے متعلق تمام معلومات نہیں دے سکتے، ایئربیس پردہشتگردوں سے 28 گھنٹے مقابلہ جاری رہا۔ سیکیورٹی پر سمجھوتہ نہیں کیا گیاایئربیس میں 3 ہزارخاندان رہتے ہیں سب سے پہلے ان کی سیکیورٹی پرتوجہ دی گئی،جس عمارت کونقصان پہنچاوہاں6ممالک کے زیرتربیت کیڈٹس تھے۔

گرفتار/منوج پاریکر

اسلام آباد( مانیٹرنگ ڈیسک 228اے این این)پاکستان کے دفتر خارجہ نے کہا ہے کہ پٹھان کوٹ ائیر بیس حملے سے متعلق بھارتی حکام سے رابطے میں ہیں، بھارت کی جانب سے فراہم کی گئی اطلاعات پر کام ہو رہا ہے۔نجی ٹی وی کے مطابق ترجمان دفتر خارجہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ پاکستان پٹھان کوٹ میں دہشت گردحملے کی مذمت کرتا ہے اورخطے میں دہشت گردی کے خاتمے کیلیے پرعزم ہے ،ترجمان کا کہنا تھا کہ ایک ہی خطے میں ہونے سے دونوں ملکوں کو مذاکراتی عمل کیلیے پرعزم رہنا چاہیے، دہشتگردی کا چیلنج پاک بھارت تعاون مضبوط کرنے کا تقاضا کرتا ہے۔

مزید :

صفحہ اول -