کلرکوں کی اپ گریڈیشن خوش آئند،اساتذہ کو نظر انداز کرنا مناسب نہیں،سجاد اکبر

کلرکوں کی اپ گریڈیشن خوش آئند،اساتذہ کو نظر انداز کرنا مناسب نہیں،سجاد اکبر

  

لاہور(اپنے نامہ نگارسے )پنجاب ٹیچرز یونین کے مرکزی صدر سید سجاد اکبر کاظمی، رانا لیاقت علی، جام صادق، چوہدری محمد سرفراز، رانا انوار، عبدالقیوم راہی ، سعید نامدار، اسلم گھمن، افضل کیانی، رحمت اللہ قریشی، شیخ اختر، عبد الطارق نیازی،رانا طارق، راؤ عابد، راؤ شمشاد، نجم النساء، صفدر کالرو، یونس حسن، منیر انجم ، امتیاز طاہر و دیگر عہدیداران نے کہا ہے کہ کلریکل سٹاف کی اپ گریڈیشن خوش آئند ہے لیکن اساتذہ کو نظر انداز کرنا مناسب طرز عمل نہیں۔ حالانکہ سیکرٹری سکولز پنجاب نے 6 مئی 2015 کو اساتذہ تنظیموں سے تحریر ی وعدہ کیا او ر اس کیلئے محکمہ تعلیم کے آفیسرز پر مشتمل کمیٹی بھی تشکیل دی گئی کہ اساتذہ کی پوسٹیں بھی اپ گریڈ کرنے کے لئے سفارشات پیش کی جائیں۔ لیکن صد افسوس کہ کمیٹی نے ابھی تک اپنی سفارشات پیش نہیں کیں اور نہ ہی اس سلسلہ میں کوئی میٹنگ طلب کی گئی۔

اس وقت محکمہ تعلیم سکولز پنجاب میں ٹیچرز کی کم از کم تعلیمی قابلیت بی اے ۔ بی ایڈ مقرر ہے۔ ایم فل اور پی ایچ ڈی لوگ گریڈ 9 کی آسامیوں پر کام کر رہے ہیں جبکہ دیگر صوبوں سمیت فیڈرل اساتذہ کو بہتر سکیل دئیے جار ہے ہیں۔ اور پنجاب میں اساتذہ پنجاب کے ساتھ سوتیلی ماں جیسا سلوک کیا جا رہا ہے۔ سزا کا قانون رائج ہے لیکن جزا کوئی نہیں ۔ پرموشن ، ریگولرائزیشن اور ٹیچر پیکیج کا حصول خواب بن کر رہ گیا ہے ۔ اساتذہ پنجاب انتہائی کرب اور ذہنی دباؤ کا شکار ہیں۔ لہذا وزیر اعلی پنجاب ، صوبائی وزیر تعلیم پنجاب، سیکرٹری سکولز پنجاب سے مطالبہ ہے کہ ایم فل کو گریڈ 16 پی ایچ ڈی اساتذہ کو گریڈ 17 جبکہ پرائمری و ایلیمینٹری اساتذ کو گریڈ 16 اور سیکنڈری اساتذہ کو گریڈ 17 دینے کے احکامات جاری کئے جائیں۔

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -