حکومت کا ایمنسٹی سکیم بل پر اپوزیشن سے تجاویز لینے کا فیصلہ

حکومت کا ایمنسٹی سکیم بل پر اپوزیشن سے تجاویز لینے کا فیصلہ

  

اسلام آباد (آن لائن) حکومت نے ایمنسٹی اسکیم بل پر اپوزیشن جماعتوں سے تجاویز لینے کا فیصلہ کیا ہے ایمنسٹی سکیم بل میں اپوزیشن کی تجاویز پر مزید ترمیم ہونے کا امکان ہے ذرائع کے مطابق حکومتی ایمنسٹی سکیم پر اپوزیشن نے سخت تحفظات کا اظہار کیا جس پر وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے ایمنسٹی سکیم بل میں ترمیم کے لئے اپوزیشن جماعتوں سے تجاویز لینے کا فیصلہ کر لیا ہے اور تجاویز پر غور و غوض کے بعد ایمنسٹی سکیم بل میں تبدیلی کا امکان ظاہر کیا جا رہا ہے ذرائع نے بتایا کہ وزیر خزانہ اسحاق ڈار آج قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے خزانہ ، ریونیو ، شماریات اعداد شمار بیورو اور نجکاری میں خود شرکت کریں گے اور کمیٹی کے ممبران سے ایمنسٹی سکم بل پر تجاویز لی جائیں گی قائمہ کمیٹی خزانہ میں چیئرمین ایف بی آر کے علاوہ وزارت خزانہ اور ایف بی آر کے اعلی آفیسران شرکت کریں گے ۔ ذرائع نے مزید بتایا ہے کہ وزیر خزانہ اسحاق ڈار ایمنسٹی سکم بل کو زیر بحث لانے کے لئے چیئرمین قائمہ کمیٹی برائے خزانہ قیصر اے شیخ سے خصوصی درخواست کریں گے ۔ ایمنسٹی سکیم بل پر اپوزیشن کے تحفظات کو دور کرنے کے لئے وزارت خزانہ نے مزید ترمیم کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے حکومت نے اپوزیشن جماعتوں سے مزید حالات خراب نہ کرنے کے لئے معاملات طے کئے جائیں گے ۔ وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے پیپلزپارٹی کی طرف سے 2008 میں پیش کی گئی ایمنسٹی سکیم کو بھی زیر بحث لانے کا فیصلہ کیا ہے اور موجودہ ایمنسٹی سکیم بل کو گزشتہ ایمنسٹی سکیم 2008 سے موازنہ کیا جائے گا ۔ ذرائع نے بتایا کہ ایمنسٹی سکیم بل معاملہ کے حل کے لئے اپوزیشن جماعتوں کو اعمتاد میں لیا جائے گا ۔یاد رہے کہ پیپلزپارٹی کے دور حکومت میں پیش ہونے والی ایمنسٹی سکیم بل 2008 کے مطابق دو فیصد ٹی کس ادائیگی کے بعد کالا دھن کو سفید کیا جا سکتا تھا اور موجودہ ایمنسٹ سکیم بل کے مطابق صرف ایک فیصد ٹیکس ادائیگی پر 5 کروڑ روپے تک کا کالے دھن کو سفید کیا جا سکے گا

مزید :

صفحہ اول -