آتشزدگی حادثات سے بچاؤ کیلئے فائر لائف سیفٹی قوانین پر عملدار آمد ضروری ہے،ڈاکٹر ارشد ضیا

آتشزدگی حادثات سے بچاؤ کیلئے فائر لائف سیفٹی قوانین پر عملدار آمد ضروری ...

  

لا ہور (کرائم رپورٹر) ڈائریکٹر جنرل پنجاب ایمرجنسی سروس (ریسکیو1122) بریگیڈئیر (ر)ڈاکٹر ارشد ضیا نے پنجاب کے تمام اضلاع میں سال 2015 میں پیش آنے والے آتشزدگی کے حادثات کاجائزہ لیتے ہوئے کہاکہ آتشزدگی کے بڑھتے ہوئے حادثات کومدِنظررکھتے ہوئے فائراور لائف سیفٹی قوانین پرعملدرآمد وقت کی اہم ضرورت ہے ۔انہوں نے کہا کہ عمارتوں میں فائر سیفٹی کے معیارکو بلڈنگ بائی لاز کے مطابق یقینی بنایا جائے تاکہ عوام الناس کو آگ کے حادثات میں محفوظ رکھا جا سکے بالخصوص بلند و بالا عمارتوں میں فائراینڈ لائف سیفٹی قوانین کا اطلاق قیمتی جانوں کو بروقت ریسکیو میں مددگار ہوتاہے۔انہوں نے عوام الناس کی حفاظت کے متعلق آگاہی پر زور دیاتاکہ شہری آتشزدگی کا واقعہ ہونے پر ریسکیو1122پر بروقت کال کر سکیں اورایمرجنسی سروس ایسے تمام سانحات میں شہریوں کو بروقت اور پیشہ ورانہ مدد دے کر بچا سکیں۔انہوں نے مزید کہا کہ آگ کے حادثات کے دوران بلند و بالا عمارتوں میں ہنگامی انخلاء کے راستے ریسکیو کرنے میں معاون ثابت ہوتے ہیں۔پراونشل مانیٹرنگ سیل کے اعدادوشمارکے مطابق ریسکیو 1122فائرسروس نے پنجاب میں11565آگ کے حادثات میں بروقت ایمرجنسی ریسپانس اور پیشہ ورانہ فائر فائٹنگ سے 26ارب روپے سے زائد نقصانات کو بچایا۔ان حادثات میں 863افرادمیں سے 353افرادلاہور؛73راولپنڈی جبکہ 70افراد فیصل آباد میں بروقت ریسکیو کیے گئے۔مزید برآ ں ریسکیو 1122فائرسروس نے آتشزدگی کے واقعات میں کل 400زخمی افراد میڈیکل ٹریٹمنٹ دینے کے بعد ہسپتال منتقل کیاجبکہ395افراد کوموقع پر ابتدائی طبی امداد فراہم کی۔2015میں آتشزدگی کے حادثات میں 68افراد جاں بحق ہوئے ۔ اعدادوشمارکے مطابق کل 4277آتشزدگی کے واقعات کمرشل ایریاز؛3756رہائشی علاقوں جبکہ 3532واقعات دیگرجگہوں پروقوع پذیرہوئے۔ڈاکٹرارشد ضیا ء نے کہا کہ اگرچہ ریسکیو1122فائر سروس نے 70ہزار سے زائد آگ کے واقعات پر بروقت اور پیشہ ورانہ فائر فائٹنگ سے 189ارب سے زائد کے نقصانات کو بچایاتاہم آ گ سے بچاؤکیلئے ایک موثرنظام وقت کی اہم ضرورت ہے جس کے تحت بلند و بالا عمارتوں میں فائر سیفٹی کے معیار کو یقینی بنایا جا سکے۔ انہوں نے بلند و بالا عمارات کی تعمیر میں بنیادی فائر سیفٹی کے معیار کی نشاندہی کرتے ہوئے کہا کہ مالکان فائرسیفٹی اقدامات کی اہمیت کو سمجھیں اور اپنی زندگیوں اور کاروبارکوخطرے میں مت ڈالیں۔

مزید :

علاقائی -