توانائی کی قلت پر 2017 کے آخر تک قابو پالیں گے ،سری لنکا پہلا ملک ہے جس سے آزاد تجارت کا معاہدہ کیا : نواز شریف

توانائی کی قلت پر 2017 کے آخر تک قابو پالیں گے ،سری لنکا پہلا ملک ہے جس سے آزاد ...
توانائی کی قلت پر 2017 کے آخر تک قابو پالیں گے ،سری لنکا پہلا ملک ہے جس سے آزاد تجارت کا معاہدہ کیا : نواز شریف

  

کولمبو(مانیٹرنگ ڈیسک)وزیراعظم نوازشریف نے کہا ہے کہ پاکستان مسائل اور مشکلات سے نکل رہاہے ،پاکستان کو کئی چیلنجزوراثت میں ملے ہیں اور توانائی کے بحران کا سب سے برا چیلنج درپیش ہے،توانائی کی قلت پر قابو پانے کےلئے منصوبے جاری ہیں،پاکستان میں کوئلے کے وسیع ذخائر سے استفادہ کیا جارہاہے ، 2017 کے آخر تک توانائی بحران پر قابو پالیں گے ۔

سری لنکن بزنس کمیونٹی اور صحافیوں سے ناشتے پر گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم نوازشریف کا کہنا تھا کہ تاپی گیس پائپ لائن منصوبہ خطے سے گیس کی کمی دور کرنے میں معاون ہوگااور اس منصوبے پر تیزی سے کام جاری ہے ، پاک چین اقتصادی راہداری خطے میں تبدیلی کا پیش خیمہ ثابت ہوگی ۔

پاکستان علاقائی تعاون کے فروغ کی پالیسی پر عمل پیرا ہے ،سری لنکا پہلا ملک ہے جس سے آزاد تجارت کا معاہدہ کیا ،ہمیں دوسروں پر انحصار کرنے کی بجائے ایک دوسرے پر انحصار کرنا ہے ،پاکستان اور سری لنکا کے درمیان بہترین اقتصادی تعلقات ہیں لیکن باہمی تجارت صلاحیت کے مطابق نہیں دونوں ملکوں کی تجارت ایک ارب ڈالر تک لے جانے کا ہدف ہے اورکم سے کم وقت میں باہمی تجارت کا حجم حاصل کریں گے ۔

پاکستان کی معاشی بحالی کا اعتراف عالمی ادارے کررہے ہیں ،بجٹ خسارے میں مرحلہ وار کمی آرہی ہے اورحکومت کی کوششوں سے معاشی خسارہ کم ہوکر 5 اعشاریہ 3 فیصد رہ گیا ، تمام بحرانوں پر قابو پانے کا سفر جاری ہے ۔

مزید :

قومی -اہم خبریں -