پی ایس 76 ،لیگی رکن صوبائی اسمبلی کی کامیابی کالعدم قرار،دوبارہ انتخابات کا حکم

پی ایس 76 ،لیگی رکن صوبائی اسمبلی کی کامیابی کالعدم قرار،دوبارہ انتخابات کا ...
پی ایس 76 ،لیگی رکن صوبائی اسمبلی کی کامیابی کالعدم قرار،دوبارہ انتخابات کا حکم

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) سپریم کورٹ نے پی ایس 76 دادو میں مسلم لیگ ن کے رکن صوبائی اسمبلی لیاقت جتوئی کی کامیابی کو کالعدم قراردیتے ہوئے دوبارہ انتخابات کا حکم دیدیا۔

تفصیلات کے مطابق 2013 کے عام انتخابات میں سندھ اسمبلی کے حلقہ پی ایس 76 سے پاکستان پیپلز پارٹی کی امیدوار پروین جونیجو کامیاب ہوئی تھیں تاہم پارٹی سے اختلافات کی بنا پر انہوں نے اپنی نشست سے استعفیٰ دیدیا تھا جس کے بعدالیکشن ٹریبونل نے دوسرے نمبر پر آنے والے امیدوار ن لیگ کے لیاقت جتوئی کو کامیاب قراردیا تھا۔

ٹریبونل کے فیصلے کو آزاد امیدوار اصغر شیخ نے سپریم کورٹ میں چیلنج کردیا تھا جس کی سماعت جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں 3 رکنی بنچ کررہا تھا۔سماعت کے دوران فاضل بینچ نے الیکشن ٹریبونل کے فیصلے پر سخت تنقید کی اور ٹریبونل کے جج کے حوالے سے ریمارکس دیتے ہوئے جسٹس ثاقب نثار کا کہنا تھا کہ الیکشن ٹریبونل کا فیصلہ غیر معیاری ہے خود کو ڈاکٹر لکھنے والوں کو قانون کا کچھ علم نہیں ، پتا نہیں ایسے لوگ جج کیسے بن گئے۔ سپریم کورٹ نے الیکشن ٹریبونل کا فیصلہ کالعدم قراردیتے ہوئے پی ایس 76 دادو میں دوبارہ انتخابات کا حکم دیدیا۔

واضح رہے کہ عام انتخابات میں پی پی کی امیدوار پروین جونیجو نے 56 ہزارووٹ حاصل کرکے کامیابی سمیٹی تھی جبکہ ن لیگ کے لیاقت جتوئی 22 ہزار ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہے تھے۔

مزید :

دادو -