کیا شمالی کوریا نے واقعی ہی ہائیڈروجن بم کا دھماکہ کیا ؟نئی کہانی سامنے آ گئی

کیا شمالی کوریا نے واقعی ہی ہائیڈروجن بم کا دھماکہ کیا ؟نئی کہانی سامنے آ ...
کیا شمالی کوریا نے واقعی ہی ہائیڈروجن بم کا دھماکہ کیا ؟نئی کہانی سامنے آ گئی

  

پیانگ یانگ(مانیٹرنگ ڈیسک)شمالی کوریا نے ہائیڈروجن بم کا کامیاب تجربہ کرنے کا دعویٰ کیاہے جبکہ دوسری جانب ماہرین جوہری امور نے شمالی کوریا کے دعوے پر شوک وشہبات کا اظہار کرتے ہوئے سوالات اٹھائے ہیں کہ آیا یہ دھماکہ واقعی میں اتنا شدید تھا جو کہ ہائیڈروجن بم کے نتیجے میں ہو سکتا ہے۔

بی بی سی کے مطابق بین الاقوامی سطح پر شمالی کوریا کی جانب سے پہلی مرتبہ ہائیڈروجن بم کے کامیاب تجربہ کرنےکے دعوے پر شکوک و شبہات کا اظہار اور مذمت کی جا رہی ہے۔امریکی تھنک ٹینک رانڈ کارپویشن کے اہلکار بروس بینٹ نے بھی شمالی کوریا کے دعوے پر شکوک کا اظہار کیا ہے۔ان کا کہنا ہے کہ ’شمالی کوریا نے جس کا دعویٰ کیا ہے اس میں دھماکہ موجودہ شدت سے دس گنا بڑا ہونا چاہیے تھا۔یا تو کم ینگ ان جھوٹ بول رہے ہیں کہ انھوں نے ہائیڈروجن بم کا تجربہ کیا ہے۔ شاید انھوں نےصرف فشن فیول والے ذرہ بہتر ہتھیار کا استعمال کیا یا پھر ہائیڈروجن کا مختصر حصہ استعمال کیا ہے اور تجربے میں ہائیڈروجن کا حصہ کام نہیں کر سکا۔

جنوبی کوریا کے ایک سیاست لی چیول وو¿ کے مطابق انھیں ملک کے خفیہ ایجنسی نے بتایا ہے کہ یہ دھماکہ ’ممکنہ طور پرہائیڈروجن پھٹنے کی سطح‘ تک نہیں پہنچ سکا۔امریکی ارضیاتی سروے کے مطابق زلزلے کی شدت 5.1 تھی اور یہ پنجی ری نامی مقام سے 50 کلومیٹر کے فاصلے پر دس کلومیٹر کی گہرائی میں آیا۔جاپانی کابینہ کے چیف سیکریٹری یوشیدے سوگا نے کہا ہے کہ ’ماضی کے واقعات کو مدِنظر رکھتے ہوئے یہ ممکن ہے کہ یہ شمالی کوریا کی جانب سے ایک جوہری تجربہ ہو۔

خیال رہے کہ گذشتہ ماہ ہی ایک امریکی تھنک ٹینک نے کہا تھا کہ مصنوعی سیارے سے حاصل ہونے والی تازہ تصاویر کے مطابق شمالی کوریا اپنے جوہری تجربات کی جگہ پر ایک نئی سرنگ تیار کر رہا ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -