پاکستان کی مشکلات کا سبب نا اہل حکمران : آصف زرداری ، ملک میں جمہوریت مضبوط نہیں : بلاول بھٹو

پاکستان کی مشکلات کا سبب نا اہل حکمران : آصف زرداری ، ملک میں جمہوریت مضبوط ...

میرپورخاص(مانیٹرنگ ڈیسک) پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری نے کہا ہے پاکستان کو نااہل حکمرانوں کی وجہ سے مشکلا ت کا سامنا ہے۔میر پور خاص میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے آصف زرداری نے کہا میں ذوالفقار علی بھٹو تو نہیں لیکن ان کی روح میرے اندر آ گئی ہے۔ جن کی حکومت ہے وہ خوداپوزیشن میں بھی ہیں، یہ اسٹیبلشمنٹ سے لڑنے چلے ہیں اور اپنی ہی حکومت میں جلسے کر ر ہے ہیں جبکہ پروٹوکول پورا حاصل کررہے ہیں۔ انہوں نے نواز شریف کو مخاطب کرتے ہوئے کہا جب حکومت ،وزیراعظم، وزیر د ا خلہ اور وزیرخارجہ آپ کا ہے اور ادارے بھی آپ کے ماتحت ہیں تو پھر کس بات کی راز داری ہے، پیچھے کے راز تو ہمیں بھی پتا ہیں، ہمیں ایسے پیغا م نہ بھیجیں جس سے آپ سمجھیں کہ ہم ڈرجائیں گے ،آپ ہمیں ڈرا سکتے ہیں نہ بھگا سکتے ہیں۔ پیپلز پارٹی اپوزیشن میں رہی ہے، ہمارے ہز ا روں لیڈرز جیل میں گئے، اس وقت آپ کو احساس نہیں ہوتا کیونکہ وزیراعظم آپ کا اور ادارے آپ کے ہیں، وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی سے حکومت نہیں چلتی تو بتائیں آپ نااہل ہیں، اپنے وزیراعظم کو کہیں استعفیٰ دے۔ آج پاکستان کو نااہل حکمرانوں کی وجہ سے مشکلات کا سا منا ہے، نواز شریف نے 4 برس وزیر خارجہ ہی مقرر نہیں کیا جب انہیں احساس ہوا تو ایسا وزیر خارجہ مقرر کیا جو پنجابی میں انگریزی بولتا ہے۔ ا یسا شخص دنیا کو پاکستان کے موقف سے کیسے آگاہ کرے گا اور د نیا اسے کس طرح سمجھے گی، جو یو سی الیکشن نہیں جیت سکتا وہ ایک لاکھ ووٹ کیسے لیتا ہے یہ راز بتائیں، اس طرح حکومتیں بن تو جاتی ہیں لیکن چلتی نہیں ہیں جس کو آپ اپنا سیاسی وارث سمجھتے ہیں اس کا چہرہ بھی کسی نے نہیں دیکھا۔انکا مزید کہنا تھا اب وہ زمانہ نہیں رہا کہ کسی کی بات چھپ سکے۔ حکمرانوں کے پاس سوچ نہیں اور عوام بھی ان کیساتھ نہیں ہیں، ان حکمرانوں کو لایا گیا تھا لیکن انھوں نے اپنے مقاصد کو پورا کیا۔ انہوں نے دوستوں کی انڈسٹریاں لگانے کے علاوہ کوئی کام نہیں کیا ۔ سا بق صدر نے کہا نواز شر یف کہتے ہیں میں راز بتا دوں گا لیکن سب سے بڑے راز تو وہ خود ہیں۔ حکومت بھی آپ کی اور مخالفت میں بھی آپ ہیں۔ سب وزراء آپ کے اور ادارے بھی آپ کے ماتحت ہیں، پروٹوکول کیلئے حکومت کی گاڑیاں استعمال کی جاتی ہیں۔

زرداری

لاہور ، کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک ، نیوز ایجنسیاں)پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے اگر دوبارہ (ن) لیگ کی حکومت آ گئی تو دنیا میں کون ان سے بات کرے گا اور اگر تحریک انصاف کی حکومت آئی تو ہم دنیا کو کیا منہ دکھائیں گے ، پیپلز پارٹی کی حکو مت بنانی ہے اور پاکستان کو بچانا ہے ،جیالے متحد ہو جائیں اور ہم سب کو دکھائیں گے پیپلز پارٹی ہی حکومت بنائے گی ،بھارت کی کوشش ہے دنیا میں کوئی پاکستان کا دوست نہ رہے ہم نے اسے بھی کامیاب نہیں ہونے دینا اور امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو بھی انگیج رکھنا پڑے گا ، موجودہ عالمی تناظر میں ہمیں متحد ہونا ہے اور ہم سب متحد ہیں، ملک میں جمہوریت تو ہے لیکن مضبوط نہیں جسے مستحکم کرنے کی ضرورت ہے ۔ گزشتہ روز بلاول ہاؤس لاہور میں پارٹی کے بانی چیئرمین ذوالفقار علی بھٹو شہید کی 90ویں سالگرہ کا کیک کاٹنے کی تقریب سے خطاب اور صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری نے کہا ذوالفقار علی بھٹو شہید کی حکومت کو کام کرنے کا بہت تھوڑا وقت ملا لیکن جتنا کام شہیدبھٹو کے دور میں ہوا پاکستان میں اس کے بعد دوبارہ اتنا کام نہیں ہوا ۔شہید بھٹو نے ملک کو آئین دیا ،ون مین ووٹ کا تصور دیا ، ملک میں ذوالفقار علی بھٹو ہی تھے جنہوں نے سیاسی اور اقتصادی سٹیٹس کو کو توڑا ،آج پاکستان کو دوبارہ انہی انقلابی اصلاحات کی ضرورت ہے ۔ ہم چاہتے ہیں سارے فیصلے عوام کریں ، طاقت کا سرچشمہ عوام ہوں ۔ ہم نے اپنے دور میں سی پیک شروع کیا اور گوادر پورٹ کو چین کے حوا لے کیا ،سی پیک کا عام آدمی کو بھی فائدہ پہنچنا چاہیے ،سندھ میں تھر کول منصوبے میں مقامی افراد کو روزگار دے رہے ہیں ،پیپلز پارٹی اقتدار میں آئی تو معیشت کو صرف امیر آدمی کیلئے نہیں بلکہ سب کیلئے بنائیگی ۔ موجودہ ملکی حالات میں ہم پر فرض ہے انتخابات لڑیں اور جیتیں ۔ مجھے ڈر ہے اگرپیپلز پارٹی کی حکومت نہ آئی پاکستان کے مستقبل کا کیا ہوگا ۔ن لیگ کی انتہا پسندی کے بارے میں تاریخ ، پانامہ کا معاملہ بھی سب کے سامنے ہے ،تحریک انصاف حکومت میں آئی تو دنیا کو کیا منہ دکھائیں گے کہ عمران خان طالبان کو اپنا بچھڑا ہوا بھائی کہتے ہیں پھر پاکستان کہاں کھڑا ہوگا ۔ ہم نے ا مریکہ ، بھارت اوردہشتگردوں کو جواب دینا ہے ۔ موجود ہ حالات میں جب ہمیں اکٹھے ہونے کی ضر و ر ت ہے لیکن نواز شریف بیان دے کر غیر ذمہ داری کا مظاہرہ کیا ۔ حکومت وقت نے امریکہ کو جواب دیاہے لیکن ہمیں اکٹھے اور مضبوط ہونا چاہیے اور ہر کسی کو پاکستان کے مفاد میں بات کرنی چاہیے ، میں تو حکومت پر تنقید کر تا رہا ہوں جب ہمارا وزیر خارجہ ہی نہیں ہوگا تو ہمارا بیانیہ کیسے پتہ چلے گا ۔ہمیں جذباتی بھی نہیں ہونا اور اپنے ملک کے بارے میں بھی سوچنا ہے اور اپنے دفاع کیساتھ ساتھ اپنا موقف بھی سامنے لانا ہے ۔ مریم نواز عمر میں مجھ سے ڈبل ہیں میرا ان سے کوئی مقابلہ نہیں جس پر تقریب میں موجود رہنماؤں اور کارکنوں نے بھرپور قہقہ لگا یا ۔ میرا واضح موقف ہے کہ اگر شرجیل میمن اور ڈاکٹر عاصم پر الزامات سچ ثابت ہوتے تو میں خود انہیں پارٹی سے نکال باہر کرتا ، کسی کو اجازت نہیں دیں گے کہ وہ پارٹی کو بدنام کرے ،یہ صاف صاف سیاسی انتقام ہے ۔ کیپٹن صفدر اور مریم نواز کے مقابلے میں شرجیل میمن کا معاملہ بھی سب کے سامنے ہے ،دو قانون نہیں ہونے چاہئیں۔ ہم چاہتے ہیں ملک میں صاف اور شفاف انتخابات ہوں لیکن پاکستان میں الیکشن بہت مشکل ہوتا ہے یہ پاکستانی الیکشن ہیں ۔ پاکستان پیپلز پارٹی ہمیشہ عوام دوست رہی ہے لیکن نواز شریف کی غلط فہمی ہے کہ آپ اداروں کی مخالفت سے سیاست کر سکتے ہیں ،نواز شریف کبھی بھی عوام دوست نہیں رہے ۔

مزید : صفحہ اول