شادی کی تقریب میں تہرا قتل ،شبہ میں 12افراد گرفتار

شادی کی تقریب میں تہرا قتل ،شبہ میں 12افراد گرفتار

لا ہور (کرائم رپورٹر)جوہر ٹاون میں تہرے قتل کی واردات کے مرکزی ملزم اسلم عرف اچھا بھٹی کا نام بلیک بک میں شامل تھا ملزم اس سے قبل بھی کانسٹیبل سمیت 11افراد کو قتل کر چکا ہے اور اس کے سر کی قیمت 1لاکھ روپے رکھی گئی تھی پولیس زرائع کے مطابق ملزمان قتل کی واردات کے بعد گاڑیوں کو ہلوکی علاقے میں چھوڑ کر فرار ہوئے ان کی گاڑیاں قبضے میں لے لی گئیں ہیں جبکہ ملزمان تاحال فرار ہیں جبکہ قتل کے شبے میں 12افراد کو حراست میں لیا گیا ہے ۔ جوہر ٹاؤن میں شادی کی تقریب میں تہرے قتل کا سبب، عدم برداشت، انا اور دیرینہ دشمنی 3 جانیں لے گئیں۔ پولیس کی ابتدائی تفتیشی رپورٹ کے مطابق دونوں گروپوں کے گن مینوں کا مونچھوں کو تاؤ دینا اور ایک دوسرے کو گھورنا،3 افراد کی جان لے گیا۔اس تہرے قتل کی وردات میں قتل ہونے والے 2افراد عمران اور خالد کاکا تعلق کھو کھر گروپ سے جبکہ تیسرے مقتول شہباز کا تعلق بھٹی گروپ سے تھا۔ انچارج انو سٹی گیشن جوہر ٹاؤن انسپکٹرشرجیل ضیاء بٹ نے روز نا مہ پا کستان سے گفتگو کرتے ہو ئے بتایا ہے کہ وہ کو شش کر رہے ہیں کہ مقتول شہباز کے ورثاء میں سے کسی سے رابطہ ہو جا ئے تاکہ اس کا پو سٹما رٹم بھی کروایا جا سکے مقتول پتو کی کا رہائشی بیا ن کیا جا تا ہے تاہم انچارج کے مطابق اس کی ایک بہن شیخوپورہ میں رہتی ہے اس سے رابطہ کر کے لا ش اس کے حوالے کرنے کی وہ کو ششوں میں وہ مصروف ہیں۔مقتول اسلم عرف اچھا کے با رے میں انہوں نے بتایا ہے کہ وہ پہلے بھی کئی قتل کر کے جیل گیا تھا تاہم صلح کے بعد اس کی رہائی ہوئی تھی اب پولیس اس سمیت تما م ملزمو ں کی گرفتاری کو یقینی بنانے کے لیے خفیہ ایجنسیوں سمیت دیگر قانون نا فذ کر نیوالے اداروں سے رابطے میں ہے تاکہ ملزموں کو باہر بھاگنے سے بھی روکا جا سکے ۔

مزید : صفحہ آخر