ٹی وائٹینر پر دودھ نہ ہونے کی وارننگ درج کرنے کے لئے ایک ماہ کی مہلت ،بھینسوں کے ٹیکوں پر پابندی

ٹی وائٹینر پر دودھ نہ ہونے کی وارننگ درج کرنے کے لئے ایک ماہ کی مہلت ،بھینسوں ...
ٹی وائٹینر پر دودھ نہ ہونے کی وارننگ درج کرنے کے لئے ایک ماہ کی مہلت ،بھینسوں کے ٹیکوں پر پابندی

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لاہور(نامہ نگارخصوصی)سپریم کورٹ نے زائد دودھ کے حصول کے لئے بھینسوں کو لگائے جانے والے آر وی ایس ٹی نامی ٹیکوں کی تیاری اورفروخت پر پابندی عائد کردی ہے ۔

چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں قائم 3رکنی بنچ نے ناقص دودھ کی فروخت کے خلاف ازخود نوٹس کیس کی سماعت کے دوران یہ ٹیکہ بنانے والی کمپنیوں آئی سی آئی اور غازی برادر زکا ان ٹیکوں سے متعلق تمام سٹاک فوری طور پرقبضے میں لینے کا حکم بھی دے دیا ،دوران سماعت چیف جسٹس نے قرار دیا کہ بھینسوں کو لگانے والے ٹیکوں سے ہارمونل تبدیلیاں اور کینسر پھیل رہا ہے،عدالت کوئی رعایت نہیں دے گی۔چیف جسٹس نے ٹی وائٹنر بنانے والی کمپنیوں سے استفسار کیا کہ کیا ٹی وائٹنر دودھ کا متبادل ہے؟ کمپنیوں کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ ہم نے کبھی دعویٰ نہیں کیا کہ ٹی وائٹنر دودھ کا متبادل ہے، جس پرچیف جسٹس نے کہا کہ عدالت حکم دے چکی ہے کہ ٹی وائٹنرکے ڈبوں پر واضح طور پر لکھا جائے کہ یہ دودھ نہیں ہے ،جس پر کمپنیوں کے وکیل نے استدعا کی کہ 4مہینے کا وقت دیں، ٹی وائٹنر کے ڈبے کی تبدیلی کر دیں گے ، عدالت نے یہ استدعا مسترد کرتے ہوئے کہا کہ 4 ماہ کا عرصہ بہت زیادہ ہے، ایک ماہ میں ڈبہ تبدیل کریں، ٹی وائٹنر پر لکھیں یہ دودھ نہیں ہے، چیف جسٹس پاکستان نے پرانا سٹاک ضائع کرنے کے احکامات جاری کردئیے جبکہ عدالت نے پنجاب حکومت کی دودھ سے متعلق اشتہاری مہم روک دی اور قراردیا کہ پنجاب حکومت نے کس حیثیت سے دودھ سے متعلق اشتہاری مہم شروع کررکھی ہے ۔ عدالت نے مضر صحت دودھ کے خلاف ازخود نوٹس کیس کی سماعت 2 ہفتوں کے لئے ملتوی کر دی۔

لائیو ٹی وی دیکھنے کے لئے اس لنک پر کلک کریں

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور