روف صدیقی سانحہ بلدیہ فیکٹری کے ملزم قرار

روف صدیقی سانحہ بلدیہ فیکٹری کے ملزم قرار
روف صدیقی سانحہ بلدیہ فیکٹری کے ملزم قرار

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن)کراچی کی انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت نے ایم کیو ایم پاکستان کے رہنما اور سابق وزیر روف صدیقی کو سانحہ بلدیہ فیکٹری کا ملزم قرار دے دیا،عدالت نے گزشتہ برس 15 اکتوبر کو روف صدیقی کو پیشی کے لیے طلب کیا تھا۔آخری سماعت کے دوران 15 اکتوبر 2017 کو عدالت نے فیکٹری کو مالکان کو واپس کرنے کی درخواست بھی مسترد کردی تھی۔

کیا آپ نے کبھی تربوز پر اس طرح کے نشان دیکھے ہیں؟ یہ کیا چیز ہے؟ جان کر آپ کھانا تو کیا ایسے تربوز کو ہاتھ بھی نہ لگائیں گے

واضح رہے کہ ستمبر 2012 میں بلدیہ ٹاون کی ایک گارمنٹس فیکٹری میں ہونے والی آتشزدگی کے نتیجے میں 250 مزدور جاں بحق ہوئے تھے۔سانحے کی تحقیق کے لیے رینجرز اور پولیس سمیت دیگر اداروں کے افسران پر مشتمل 9 رکنی مشترکہ تحقیقاتی کمیٹی تشکیل دی گئی تھی، جس نے اپنی رپورٹ سندھ ہائی کورٹ میں جمع کرائی۔جے آئی ٹی رپورٹ میں روف صدیقی کا بھی ذکر کیا گیا تھا، تاہم بعد ازاں پولیس نے ان کا نام مقدمے کے مرکزی ملزمان کے خانے سے خارج کردیا تھا۔رینجرز پراسیکیوٹر نے عدالت سے درخواست کی کہ روف صدیقی کو مقدمے میں ملزم نامزد کیا جائے۔عدالت کو بتایا گیا کہ پولیس نے سانحہ بلدیہ کیس کے چالان میں روف صدیقی کا نام کالم نمبر 2 میں رکھ کر ملزمان کی فہرست سے نکال دیا تھا۔تاہم روف صدیقی کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ جے آئی ٹی میں ان کے موکل کا صرف ذکر ہے، جس کے باعث انہیں شامل تفتیش نہیں کیا جاسکتا۔عدالت نے وکلاکے دلائل سننے کے بعد روف صدیقی کو سانحہ بلدیہ ٹاون کا مرکزی ملزم قرار دیتے ہوئے ان کا نام شامل تفتیش کرنے کا حکم دیا۔عدالت نے کیس کی مزید سماعت 11 جنوری تک ملتوی کردی۔

مزید : علاقائی /سندھ /کراچی