مندر تنازع‘ ہندو انتہا پسندوں کا مسلمان خاتون صحافی پر تشدد

مندر تنازع‘ ہندو انتہا پسندوں کا مسلمان خاتون صحافی پر تشدد

نئی دہلی(سی پی پی ) بھارتی ریاست کیرالہ میں ہندو انتہا پسندوں نے کوریج کرنے والی مسلمان خاتون صحافی کو تشدد کا نشانہ بنا ڈالا۔تفصیلات کے مطابق بھارتی ریاست کیرالہ کے سبریمالا مندر میں خواتین کے داخلے پر شروع ہونے والے ہنگامے کی کوریج کے لیے جانے والی خاتون صحافی سجیلا عبدالرحمان کی روتے ہوئے تصویر سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی۔مندر میں دو خواتین کے داخلے کے بعد ہندو انتہا پسندوں نے پرتشدد مظاہرے کیے اور املاک کو نقصان پہنچایا اسی دوران انہوں نے خاتون صحافی کو بھی نہ بخشا۔انتہا پسندوں کے اصل چہرہ دکھانے کے لیے رپوٹنگ کے لیے جانے والی خاتون صحافی کو انتہا پسندوں نے اس وقت تشدد کا نشانہ بنایا جب وہ اپنے فرائض انجام دے رہی تھیں۔مسلمان خاتون صحافی پر تشدد کی بات کو بھارتی میڈیا نے دبانے کی کوشش کی مگر ان کی کیمرہ اٹھائے ایک تصویر سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی تو مقامی میڈیا نے واقعے پر تبصرہ شروع کیا۔

سجیلا کا کہنا تھا کہ کوریج کے دوران ان کی کمر پر کسی نے زور سے لات ماری جس کی وجہ سے انہیں شدید تکلیف کا سامنا کرنا پڑا البتہ وہ اپنی صحافتی ذمہ داریاں آخر تک نبھاتی رہیں۔خاتون صحافی کا کہنا تھا کہ میں اپنی تکلیف کی وجہ سے نہیں روئی بلکہ کسی نے میری مدد نہیں کی، میں نے لوگوں سے بہت التجا کی کہ وہ مجھے بچا لیں مگر انتہا پسندوں کے خوف سے کوئی آگے نہ بڑھا۔سجیلا کا کہنا تھا کہ مجھے بس اس بات کا خوف تھا کہیں یہ لوگ میرا کیمرہ نہ توڑ دیں اگر ایسا ہوتا تو میری ساری محنت ضائع ہوجاتی، اس لیے میں نے ہر صورت کیمرے کو بچانے کی کوشش کی۔

مزید : علاقائی