بھارت کی 2خواتین نے اپنے شوہروں سے طلاق لے کر آپس میں شادی کر لی، دراصل کب سے اکٹھی ہیں؟ حقیقت سے پردہ اٹھ گیا

بھارت کی 2خواتین نے اپنے شوہروں سے طلاق لے کر آپس میں شادی کر لی، دراصل کب سے ...
بھارت کی 2خواتین نے اپنے شوہروں سے طلاق لے کر آپس میں شادی کر لی، دراصل کب سے اکٹھی ہیں؟ حقیقت سے پردہ اٹھ گیا

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) گزشتہ سال ستمبر میں بھارتی سپریم کورٹ کے پانچ رکنی بنچ نے ملک میں ہم جنس پرستی کوجائز قرار دے دیا تھا، جس کی آڑ میں اب بھارت میں ہم جنس پرستوں کی شادی کو قانونی قرار دینے کی مہم بھی زوروں پر ہے۔ ہم جنس پرستی جائز قرار دینے کے کچھ دن بعد ہی دو ہم جنس پرست مرد اپنی شادی رجسٹرڈ کروانے میرج رجسٹرار کے پاس پہنچ گئے تھے اور اب دو لڑکیوں نے اپنے شوہروں کو طلاق دے کر آپس میں شادی کر لی ہے۔ ان دونوں لڑکیوں کا تعلق ریاست اترپردیش کے ضلع حمیر پور سے ہے۔ دونوں کے نام سامنے نہیں آ سکے تاہم ایک کی عمر 26سال ہے جو ایک سکول ٹیچر کی بیٹی ہے اور ایک کی عمر 21سال ہے جس کا باپ محنت مزدوری کرتا ہے۔

دونوں لڑکیوں نے دیا شنکر تیواری نامی وکیل کے ذریعے اپنی شادی رجسٹرڈ کروانے کی درخواست دی جوسب رجسٹرار رام کشور پال نے یہ کہتے ہوئے مسترد کر دی کہ ملک میں ہم جنس پرستوں کی شادی کا کوئی قانون موجود نہیں ہے۔ دیا شنکر کا بھی کہنا تھا کہ ”میری کلائنٹس کی شادی اس لیے رجسٹرڈ نہیں ہو سکی کیونکہ ملک میں ایسا کوئی قانون موجود نہیں تاہم بھارتی سپریم کورٹ سیکشن 377کو کالعدم قرار دے چکی ہے جو ہم جنس پرستی کو قابل سزا جرم قرار دیتا تھا۔ اس کے بعد اب میری کلائنٹس یہ حق محفوظ رکھتی ہیں کہ وہ اکٹھی رہ سکیں۔“

مزید : بین الاقوامی