مشرقی بیت المقدس میں اسرائیل نے فلسطینیوں کے 200مکانات مسمار کر دیئے

مشرقی بیت المقدس میں اسرائیل نے فلسطینیوں کے 200مکانات مسمار کر دیئے

  



مقبوضہ بیت المقدس(صباح نیوز)قابض صہیونی فوج کی طرف سے مشرقی بیت المقدس میں فلسطینیوں کے 200مکانات مسمار کر دیئے گئے ۔مرکزاطلاعات فلسطین کے مطابق انسانی حقوق کی تنظیم”یورو مڈل ایسٹ“کی رپورٹ کے مطابق گذشتہ برس اسرائیلی فوج کے ہاتھوں فلسطینیوں کے گھروں کی مسماری میں اضافہ ہوا۔ 2018ء  میں مشرقی بیت المقدس میں 177اور 2017 کو 142مکانات مسمار کیے گئے تھے۔فلسطینی مبصرین   نے کہا کہ القدس میں فلسطینیوں کے گھروں کی مسماری صہیونی ریاست کی طرف سے فلسطینیوں کو بے گھر کرنا اور القدس میں یہودی آبادی میں اضافہ کرتے ہوئے فلسطینیوں کو اقلیت میں تبدیل کرنا ہے۔رپورٹ میں کہا گیا کہ صہیونی ریاست کی طرف سے بیت المقدس کے  فلسطینیوں کے خلاف دانستہ طورپر نسل پرستی کا مظاہرہ کیا جا رہا ہے۔ نہ صرف فلسطینیوں کے بنے بنائے مکانات مسمار کیے جا رہے ہیں بلکہ القدس میں فلسطینیوں کو مکانات کی تعمیر کی اجازت بھی نہیں دی جا رہی ہے

مزید : علاقائی