ادیب،دانشورکی پہچان کیلئے انٹرنیشنل سنٹر قائم کیا جائے،امجد اسلام امجد

 ادیب،دانشورکی پہچان کیلئے انٹرنیشنل سنٹر قائم کیا جائے،امجد اسلام امجد

  



لاہور(فلم رپورٹر)معروف شاعر،دانشور اور ڈرامہ نگار امجد اسلام امجد کو ترکی میں دیئے جانے والی ادب کے عالمی اعزاز ”نجیب فاضل“ملنے پر گزشتہ روز مقامی ہوٹل میں ایک شاندار اور پروقار تقریب کا انعقاد ہوا۔ میزبانی کے فرائض غزالی ایجوکیشن ٹرسٹ کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر سید عامر جعفری نے انجام دئے۔مہمانان گرامی میں شعیب بن عزیز،اوریا مقبول جان،ڈائریکٹر سید نور،کامیڈین افتخار ٹھاکر،ڈاکٹر صغریٰ صدف،مصنف افتخار افی،شاعرہ بشریٰ اعجاز اور ارشاد احمد عارف کے علاوہ گروپ ایڈیٹرکو آرڈینیشن روزنامہ پاکستان ایثار رانا نے بھی خصوصی شرکت کی۔ شرکاء نے امجد اسلام امجد کو گلدستہ اور بیش قیمت تحفہ پیش کیا۔شرکاء نے کہا کہ امجد اسلام امجدبہت بڑے شاعر،ادیب اور دانشور ہونے کے ساتھ ساتھ بڑے انسان بھی ہیں۔وہ ایک ایسی شخصیت ہیں جن کی شہرت وقت کے ساتھ ساتھ بڑھی ہے۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے امجد اسلام امجدنے کہا کہ مجھے اس ایوارڈکو حاصل کرنے کی خوشی ہے مگر اس سے بھی زیادہ اس بات کی خوشی ہے کہ یہ ایوارڈ کسی پاکستانی کو ملا ہے۔ترکی میں ایوارڈ تقریب کے موقع پر میں اردو میں تقریرکرنا چاہتا تھا لیکن ترجمان نہ ہونے کی وجہ سے میں نے انگریزی میں تقریر کی۔مجھے ایک بات نے بہت متاثر کیا کہ ترکی کے صدر طیب اردگان نے تقریب میں شرکت کا وقت 7بجے دیا تھا اور وہ چند سیکنڈ پہلے ہی پہنچ گئے تھے۔زندہ قومیں اپنی تہذیب روایات اور کلچر اور اس کے ساتھ جڑے ہوئے لوگوں کی کس طرح قدر کرتے ہیں جبکہ پاکستان میں بہت کم لوگوں کو ترکی،ایران،لیبیا،عراق اور دیگر ملکوں میں کام کرنے والے ادیبوں اور دانشوروں کے نام آتے ہوں گے،میری تجویز ہے کہ تھرڈ ورلڈ کنٹریز کے ادیبوں اور دانشوروں کے لئے ایک انٹرنیشنل سنٹر قائم ہونا چاہیے تاکہ ان کو ایک دوسرے کا جاننے کا موقع مل سکے۔

اعزاز تقریب

مزید : صفحہ آخر